یوٹیوب اب نیوز چینلز کی جگہ لینے کے لیے تیار؟

یوٹیوب اب نیوز چینلز کی جگہ لینے کے لیے تیار؟

سیلیکون ویلی(مانیٹرنگ ڈیسک)اگر تو آپ خبریں دیکھنا پسند کرتے ہیں مگر سفر یا کسی اور وجہ سے ٹیلیویڑن رسائی سے دور ہوجاتا ہے، تو اب یہ کمی یوٹیوب سے پوری کی جاسکے گی۔جی ہاں گوگل اپنی اس ویڈیو شیئرنگ سائٹ پر اب بریکنگ نیوز کے نام سے ایک نیا اضافہ کرنے والا ہے تاکہ صارفین آسانی سے اہم خبروں تک رسائی حاصل کرسکیں۔یہ اضافہ یوٹیوب ایپ اور ڈیسک ٹاپ ورڑن دونوں پر کیا جائے گا جسے اینڈرائیڈ پولیس نے اسپاٹ کیا۔یہ نیا سیکشن ریکومینڈیڈ چینیل سے ملتا جلتا ہوگا جو کہ ویب ہوم پیج پر نظر آتا ہے جبکہ موبائل ایپ پر یہ سجیسٹیڈ ویڈیوز کے درمیان ہوگا۔ابھی یہ فیچر سب سے صارفین کو دستیاب نہیں تاہم جن لوگوں نے اسے دیکھا ہے، اس میں بارسلونا میں دہشت گردی کے حملے اور وائٹ ہاؤس کے اہم عہدیدار کا عہدہ چھوڑنے کی رپورٹس نظر آئیں۔ابھی یہ واضح نہیں کہ ایسا مواد ہر وقت نظر آئے گا یا کسی ہنگامی خبر کے دوران نمودار ہوگا۔مگر پھر بھی یہ یوٹیوب کے فرنٹ پیج پر ایک کارآمد اضافہ ضرور ہے جس سے گوگل کو توقع ہے کہ وہ ٹی وی ناظرین کو بھی زیادہ وقت اپنی سائٹ پر گزارنے پر مجبور کرسکے گا۔یہ

بھی ابھی کہنا مشکل ہے کہ کب تک تمام صارفین کے لیے یہ دستیاب ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4