ضلع لودھراں کی سیاست میں نئی صف بندیوں کیلئے جوڑ توڑ کا آغاز

ضلع لودھراں کی سیاست میں نئی صف بندیوں کیلئے جوڑ توڑ کا آغاز

دھنوٹ (نمائندہ خصوصی )ضلع لودھراں کی سیاست میں ڈرامائی تبدیلیاں متوقع نئی صف بندیوں کے لیے جوڑ توڑ کا آغازذرائع کے مطابق وزیر مملکت عبدالرحمن خان کانجو اور ان کے ماموں محمد اخترخان کانجو کے درمیان صلح کی کوششیں تیز آئندہ چند روز میں وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد شہباز (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

شریف کی علی پور آمد متوقع ہے۔ جہانگیر خان ترین کی پوزیشن نے سیاسی حریفوں کو اکٹھا ہونے پر مجبور کردیا ہے۔ کانجو خاندان اپنی سیاسی بقا کی خاطر ماموں اور بھانجے کے درمیان سیاسی کشیدگی دور کرانے کے لیے پرعزم ہے۔ اگر عبدالرحمن خاں کانجو اورمحمداخترخاں کانجو کے درمیان صلح کی کوششیں کامیاب ہوگئیں تو محمدصدیق خاں بلوچ کی جگہ جہانگیرخان ترین کا مقابلہ عبدالرحمن کانجو اور نواب امان اللہ خان کے مقابلے میں محمد اختر خاں کانجو کو ن لیگ کے ٹکٹ پر میدان میں اتاراجاسکتا ہے جبکہ محمد صدیق خان بلوچ اپنے حریف جہانگیر خان ترین کو ٹف ٹائم دینے کے لیے یوسف رضاگیلانی کو اپنی جگہ لانے کی کوشش کرسکتے ہیں۔ عبدالرحمٰن خاں کانجو کا اپنا ووٹ بنک بھی ہے اور ان کی مقبولیت میں وزیر مملکت بننے سے مزیداضافہ ہوا ہے۔ اس حوالے سے آنے والے دن انتہائی اہم ہیں۔

لودھراں کی سیاست

 

مزید : ملتان صفحہ آخر