پشاور،سوات موٹروے کے ملازمین کا تنخواہیں نہ ملنے پر مظاہرہ

پشاور،سوات موٹروے کے ملازمین کا تنخواہیں نہ ملنے پر مظاہرہ

پشاور( کرائمز رپورٹر)اتوارکے روز سوات موٹر وے بطور ڈمپر و ایسکیلیٹر کام کرنے والے ملازمین نے تنخواہیں نہ ملنے اور چیک باونس ہونے پر موٹر وے ٹھیکیدار اور انتظامیہ کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ ۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر انکے ساتھ ہونے والی نا انصافی کیخلاف مختلف نعرے درج تھے ۔ مظاہرین کی قیادت عرب نواز آفریدی ، شوکت علی ، نعیم ، اور نور الاسلام خان کر رہے تھے ۔ مظاہرین سے خطاب میں مقررین کا کہنا تھا کہ انہوں نے ستائس فروری کو سوات موٹر وے میں ڈمپر و ایسکیلیٹر کے لئے کام شروع کیا جس میں ان سمیت پندرہ افراد شریک ہیں ۔ معائدے کے تحت ہر مہینے انہیں انکی تنخواہ جو کہ لاکھوں میں بنتی ہے وہ ملنا تھی لیکن پہلے دو ماہ بعد ان پندرہ افراد کو تنخواہ کے حصول کے لئے موٹر وے ٹھیکیدار نثار عباسی اور ایاز خٹک پبی کی جانب سے جو چیک دئے گئے وہ بنک میں باونس ہوگئے ۔ انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے جب موٹر وے انتظامیہ سے رابطہ کیا گیا تو متعلقہ ذمہ دار افسروں نے ملاقات سے بھی انکار کردیا ۔ انہوں نے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک اور چیف جسٹس پشاور ہائی کورٹ سے مطالبہ کیا ہے کہ انکی تنخوا ہ کی رقم جو کہ اٹھارہ سے بیس لاکھ روپے موٹر وے سوات انتظامیہ کی طرف بقایا ہے کے حصول کے لئے انکی مدد کریں بصورت دیگر وہ احتجاج پر مجبور ہونگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر