لارڈ میکالے کا نظام دوبارہ مسلط کیا جارہا ہے،حافظ عاکف سعید

لارڈ میکالے کا نظام دوبارہ مسلط کیا جارہا ہے،حافظ عاکف سعید

کراچی(اسٹاف رپورٹر) امیر تنظیم ا سلامی حافظ عاکف سعید نے کہا ہے کہ دور غلامی میں ہم پر لارڈ میکالے کا نظام مسلط کیا گیا تھا جس کے اثرات بدسے قوم آج بھی محفوظ نہیں لیکن آزادی کے حصول کے بعد ہمارے حکمراں غلامی کے اثرات سے باہر نہیں نکلے اور وہ نصاب تعلیم میں ایسی تبدیلی کرنے کے لئے کوشاں ہیں جس کے نتیجے میں قوم اپنے دین سے دور ہواور اپنے رسول ﷺ کی محبت اس کے افراد کے دلوں سے نکل جائے اور اپنے قومی ہیروز کی بجائے اغیار کے ہیروز کی عظمت ان کے دلوں میں بٹھائی جائے۔ وہ اس خبر پر تبصرہ کررہے تھے جس کے مطابق پنجاب ٹکسٹ بک بورڈ نے مبینہ طور پر نصاب تعلیم سے اسلام، پاکستان اورفوج سے متعلق اسباق ، مضامین اورتصاویر کو خارج ، قائد اعظم ، مینار پاکستان سمیت دیگر اسباق اور ملک کا نقشہ نکال دئیے گئے ہیں۔پاک فوج اور 1965کے جنگ کے ہیرو راجہ عزیز بھٹی کا مضمون نکال کر امریکہ کے کسی قومی ہیروکے بارے میں مضمون نصاب میں شامل کردیا گیا ہے اور حد تو یہ ہے کہ رحمت عالم ﷺ، عید میلاد النبی کا مضمون اور قرآن کا لفظ بھی حذف کردیا گیا ہے۔اور یہ سبا کچھ نصاب کے مرتبین نے کیا ہے جن میں انگریز کنسلٹنٹ نکولس شا کا نام بھی شامل ہے۔غالباً یہ سارا کچھ اس لئے کیا جارہا ہے تاکہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کے تشخص کوختم کرکے اسے ایک لبرل ریاست قرار دے دیا جائے جس کا عزم سابق وزیر اعظم نے ظاہر کیا تھا۔ ظاہر ہے کہ حکومت ان ہی کی جماعت کی ہے جو اپنے معزول قائد کے پروگرام کو آگے بڑھارہی ہے۔ امیر تنظیم اسلامی نے کہا کہ ہم اس کی سخت مذمت کرتے ہیں اور پنجاب حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ نصاب تعلیم میں تبدیلی سے باز آجائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر