’اسلامی طورپر یہ جائزہے اور ہم کوئی مداخلت نہیں کررہے بلکہ ۔ ۔ ۔‘بھارتی سپریم کورٹ نے تین طلاقوں کے کیس کا فیصلہ سنادیا

’اسلامی طورپر یہ جائزہے اور ہم کوئی مداخلت نہیں کررہے بلکہ ۔ ۔ ۔‘بھارتی ...
’اسلامی طورپر یہ جائزہے اور ہم کوئی مداخلت نہیں کررہے بلکہ ۔ ۔ ۔‘بھارتی سپریم کورٹ نے تین طلاقوں کے کیس کا فیصلہ سنادیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارتی سپریم کورٹ نے ایک ساتھ تین طلاقوں کے کیس کا فیصلہ سنادیا اور اسلامی قانون کو جائزقراردیتے ہوئے کہاکہ معاملہ پارلیمنٹ کو بھجواتے ہوئے چھ ماہ کے اندر قانون سازی کرنے کا حکم دیدیا،

بھارتی سپریم کورٹ نے ملک کے آئین کے پیش نظر ایک ساتھ تین طلاقوں کے معاملے کو غیرآئینی قراردیتے ہوئے کہاکہ تین طلاقوں کی وجہ سے مسلمان خواتین کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہوتی ہے تاہم چیف جسٹس جے ایس کھیر اور جسٹس عبدالعزیم نے تین طلاقوں کے اسلامی قانون کو جائز قراردیتے ہوئے کہاکہ عدالت اس اسلامی مسئلے پر کوئی مداخلت نہیں کررہی ۔ چیف جسٹس نے اس معاملے پر پارلیمنٹ کو چھ ماہ کے اندر اندر قانون سازی کرنے کا حکم دیا ہے تاکہ کسی کے حقوق کی خلاف ورزی نہ ہو۔

مزید : بین الاقوامی