سعودی بادشاہ کی چھٹیاں منانے کیلئے مراکش آمد لیکن ساتھ ایسی چیز لے آئے کہ پورے کے پورے ملک کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں، جان کر آپ کو بھی یقین نہیں آئے گا کہ۔۔۔

سعودی بادشاہ کی چھٹیاں منانے کیلئے مراکش آمد لیکن ساتھ ایسی چیز لے آئے کہ ...
سعودی بادشاہ کی چھٹیاں منانے کیلئے مراکش آمد لیکن ساتھ ایسی چیز لے آئے کہ پورے کے پورے ملک کی آنکھیں کھلی کی کھلی رہ گئیں، جان کر آپ کو بھی یقین نہیں آئے گا کہ۔۔۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

رباط(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان مراکش میں گرمیوں کی چھٹیاں گزارنے کے لئے گئے تو دیکھنے والے ان کی شان و شوکت اور آن بان کے جلوے دیکھتے ہی رہ گئے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق سعودی فرمانروا ہزاروں رفقائ، مہنگی ترین گاڑیاں، اور ضرورت کی ہر شے ساتھ لے کر مراکش پہنچے، چنانچہ اس دورے پر 10 کروڑ ڈالر (تقریباً 10 ارب پاکستانی روپے) خرچ ہوئے، جو کہ مراکش میں آنے والے غیر ملکی سیاحوں سے ہونے والی کل آمدنی کا تقریباً 1.5 فیصد بنتا ہے۔

اپنی موت کے 20 برس بعد شہزادی ڈیانا نے اپنے شوہر شہزادہ چارلس کی لٹیا ڈبودی، ایسا انکشاف سامنے آگیا کہ شہزادے کی زندگی جیتے جی ختم ہوگئی

دی انڈیپینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ ماہ جب سعودی فرمانروا مراکش میں چھٹیاں گزارنے کیلئے پہنچے تو وزیراعظم سعد الدین عثمانی نے تانجیر ائیرپورٹ پر ان کا استقبال کیا۔ وہ وہاں سے اپنے ذاتی محل گئے، جو کہ 74 ایکڑوں پر مشتمل ہے۔ فرمانروا کے ساتھ تقریباً 1000لوگ موجود تھے، جن میں وزرائ، مشیران او ر ان کے عزیز شامل تھے۔ ان سب کو مراکش کے مہنگے ترین ہوٹلوں میں ٹھہرایا گیا تھا، جبکہ ان کے لئے کالے رنگ کی 100 مرسیڈیز اور رینج روور گاڑیاں بھی حاضر خدمت تھیں۔ گزشتہ سال مراکش میں واقع سعودی فرمانروا کے محل کی خصوصی تزئین و آرائش کی گئی تھی اور اس میں نئی عمارتوں اور ہیلی پیڈز کا اضافہ کیاگیا تھا۔

سعودی فرمانروا کے دورے کو مراکش کی معیشت کیلئے تازہ ہوا کا جھونکا قرار دیا گیا ہے کیونکہ ہزاروں لاکھوں غیر ملکی سیاح آتے تو اتنی آمدنی ہوتی جتنی صرف سعودی فرمانروا کی آمد سے ہوئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس