ڈونلڈ ٹرمپ کی پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی قابل مذمت،مقتدر ادارے فیصلہ کریں امریکہ ہمارا دوست ہے یا دشمن :ملی یکجہتی کونسل

ڈونلڈ ٹرمپ کی پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی قابل مذمت،مقتدر ادارے فیصلہ کریں ...
 ڈونلڈ ٹرمپ کی پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی قابل مذمت،مقتدر ادارے فیصلہ کریں امریکہ ہمارا دوست ہے یا دشمن :ملی یکجہتی کونسل

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے صدر صاحبزادہ ابو الخیر محمد زبیر نے  کہا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی پاکستان کے خلاف ہرزہ سرائی انتہائی قابل مذمت ہے، حزب المجاہدین کو دہشت گرد تنظیم قرار دینا ، پروفیسر حافظ سعید کے خلاف اقدامات اور پاکستان سے ڈو مور کا تقاضاامریکی پالیسیوں کا آئینہ دار ہے،ریاست پاکستان کے مقتدر اداروں کو اب فیصلہ کرنا چاہیے کہ کیا امریکہ پاکستان کا دوست ہے یا دشمن؟

 منصورہ لاہور میں ملی یکجہتی  کونسل کے ایک اہم مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے  کہا کہ صاحبزادہ ابو الخیر محمد زبیر نے عسکری ترجمان کی جانب سے دہشت گردی کے واقعات بالخصوص2013میں عاشورہ محرم کے موقع پر راولپنڈی میں ہونے والے سانحہ کے بارے انکشافات سے ملی یکجہتی کونسل پاکستان کا موقف ایک مرتبہ پھر درست ثابت ہو گیاہے کہ ملک میں ایک ہی گروہ شیعہ و سنی قتل و غارت میں ملوث ہے جو بیرونی ایجنڈے کے مطابق ملک میں فرقہ واریت کو پھیلانا چاہتا ہے، کونسل نے ہمیشہ دشمن کی تمام تر سازشوں کوہمیشہ بروقت بے نقاب کیا ہے ۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئےملی یکجہتی کونسل کے سیکریٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا کہ2013میں راولپنڈی میں عاشورہ کے واقعہ کے فورا بعد ہمارا ایک وفدمختلف مسالک کے علماءسے ملا ،مدرسہ تعلیم القرآن کادورہ کیا گیااور امام بارگاہوں پر ہونے والے حملوں کی بھی مذمت کی گئی ، اسی طرح کونسل کے سربراہی اجلاس میں جنرل(ر) حمید گل مرحوم کی سربراہی میں ایک کمیٹی بنائی گئی جس نے اس مسئلہ کو سلجھانے اورمسلکی ہم آہنگی کو فروغ دینے میں اہم کردار ادا کیا ، ملی یکجہتی کونسل کی ہمیشہ کوشش رہی ہے کہ ملک میں بین المسالک ہم آہنگی کی فضا برقرار رہے ۔ انھوں نے مزید کہا کہ آئی ایس پی آر کے انکشافات سے یہ سبق ملتا ہے کہ مختلف مسالک کے لوگوں کو کسی بھی فرقہ وارانہ واقعہ پر فوری اور جذباتی ردعمل کا مظاہرہ نہیں کرنا چاہیے بلکہ پہلے اس کی تحقیق اور تصدیق کرنی چاہیے تاکہ دشمن اپنے ارادوں میں کامیاب نہ ہوسکے ۔اجلاس میں کونسل پنجاب کے صدر میاں مقصود احمد نے کہا کہ تمام مسالک کے علماءکو چاہیے کہ مل کر ایک دوسرے کے پیچھے نماز پڑھیں ، علماءکے اتحاد کا مظاہرہ دیکھ کر عوام پر بہت اچھے اثرات مرتب ہوتے ہیں ۔اجلاس میں کونسل کے آئندہ اجلاسوں اور پروگراموں کی توثیق اور تائید کی گئی ۔ اجلاس میں کونسل کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل ثاقب اکبر ، کوٹ مٹھن کے سجادہ نشین پیر معین الدین کوریجہ ،جمعیت اتحاد علمائے پاکستان کے سربراہ مولانا عبد المالک ، جمعیت علمائے پاکستان کے سینئر نائب صدر مفتی طاہرتبسم ، جمعیت علمائے پاکستان کے نائب صدور بیرسٹر وسیم الحسن اور میاں محمد بشیر ،جماعت اسلامی کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل حافظ ساجد انورنیز جماعت اسلامی پنجاب کے صوبائی قائدین کی ایک کثیر تعداد نے شرکت کی ۔

مزید : قومی