جب سے کارروائی شروع ہوئی ہے جھوٹے گواہ بھاگنا شروع ہو گئے، چیف جسٹس کے قتل کے کیس میں ریمارکس

جب سے کارروائی شروع ہوئی ہے جھوٹے گواہ بھاگنا شروع ہو گئے، چیف جسٹس کے قتل کے ...
جب سے کارروائی شروع ہوئی ہے جھوٹے گواہ بھاگنا شروع ہو گئے، چیف جسٹس کے قتل کے کیس میں ریمارکس

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے قتل سے متعلق میں کیس میں ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا اور ملزم محمد ممتاز کو بری کردیا۔چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے دوران سماعت جھوٹی گواہی کے حوالے سے اہم ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جب سے کارروائی شروع ہوئی جھوٹے گواہ بھاگنا شروع ہو گئے،گواہ جھوٹ بولتے ہیں توقانون کابھی سامناکریں۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں سرگودھا کے رہائشی نصراللہ کے قتل سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی ،ٹرائل کورٹ نے ممتاز کو سزائے موت کی سزاسنائی ،ہائیکورٹ نے سزائے موت کو عمرقید میں تبدیل کردیا تھا،دوران سماعت جھوٹی گواہی کے حوالے سے چیف جسٹس پاکستان نے اہم ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ جب سے کارروائی شروع ہوئی ہے جھوٹے گواہ بھاگنا شروع ہو گئے،گواہ جھوٹ بولتے ہیں توقانون کا بھی سامناکریں،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ نہ اسلام جھوٹ کی اجازت دیتا ہے اور نہ ہی قانون ،عدالت کیسے جھوٹ کی اجازت دے سکتی ہے ،کتنے لوگ جھوٹے گواہوںکی وجہ سے تکلیف مصیبت برداشت کرتے ہیں ،سپریم کورٹ نے ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قراردیتے ہوئے ملزم ممتاز کو بری کردیا،عدالت نے جھوٹی گواہی کی بنیاد پر محمدممتاز کو بری کردیا۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...