یقین ہے کے پی نے 35 ہزار روپے ایکڑ سے کم میں درخت لگائے ہوں گے ،سپریم کورٹ کے سندھ میں جنگلات سے متعلق کیس میں ریمارکس

یقین ہے کے پی نے 35 ہزار روپے ایکڑ سے کم میں درخت لگائے ہوں گے ،سپریم کورٹ کے ...
یقین ہے کے پی نے 35 ہزار روپے ایکڑ سے کم میں درخت لگائے ہوں گے ،سپریم کورٹ کے سندھ میں جنگلات سے متعلق کیس میں ریمارکس

  


کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے سندھ حکومت کی جانب سے جنگلات کی زمین لیزپردینے اورقبضے سے متعلق کیس میں سندھ حکومت سے جنگلات کو محفوظ کرنے سے متعلق پالیسی سپریم کورٹ میں جمع کرانے کی ہدایت کردی۔جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ مجھے یقین ہے 35 ہزار روپے ایکڑسے کم میں کے پی نے درخت لگائے ہوں گے۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سندھ حکومت کی جانب سے جنگلات کی زمین لیزپردینے اورقبضے سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،جسٹس عمر عطا بندیال نے استفسار کیاکہ جوزمین آپ الاٹ کرتے ہیں اس کی کیا گارنٹی ہے کہ وہ آپ کوواپس کی جائے گی؟جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ پچھلی سماعت میں ہم نے کہا تھا کہ قبضہ سے چھڑائی گئی زمین کی تفصیلات بتائیں،جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ آپ کے پاس کوئی فورس تونہیں ہے، صرف فارسٹ گارڈ ہوتے ہیں، جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ آپ بتائیں کس نے لوگوں سے قبضے کی زمین واگزار کروانی ہے؟وکیل سندھ حکومت نے کہا کہ ہمارے پاس سیٹلائٹ تصاویرہیں جن میں واگزار کی گئی زمین دکھائی گئی ہے۔

درخواست گزار قاضی علی اظہر نے موقف اختیار کیاگیاکہ سندھ حکومت سے محکمہ جنگلات نے6 ہزارایکڑ زمین کیلئے21 کھرب روپے مانگے ہیں،انھوں نے ایک ایکڑپرپودے لگانے کیلئے35 ہزار روپے مانگے ہیں،جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ کے پی حکومت سے پوچھ لیں انھوں نے کتنے روپے ایکڑکے حساب سے درخت لگائے،کے پی میں بھی درخت لگانے کے حوالے سے شور مچا تھا،4 یا 5 ہزار روپے میں ایک ایکڑ زمین پر پودے لگ سکتے ہیں،مجھے یقین ہے 35 ہزار روپے ایکڑسے کم میں کے پی نے درخت لگائے ہوں گے،جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ آپ نے جنگلات کومحفوظ کرنے سے متعلق کوئی پالیسی بنائی ہے تو بتائیں،عدالت نے حکم دیا ہے کہ سندھ حکومت جنگلات کومحفوظ کرنے سے متعلق پالیسی سپریم کورٹ میں جمع کرائے۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی


loading...