کشمیریوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے:ڈاکٹر عارف علوی

کشمیریوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے:ڈاکٹر عارف علوی
کشمیریوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے:ڈاکٹر عارف علوی

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ ہم کشمیریوں کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھیں گے،بالخصوص 5 اگست کو بھارت کی طرف سے 370 اور 35 اے کو ختم کرکے مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت ختم  کے بعد مقبوضہ کشمیر میں آج 18 ویں روز سے کرفیو نافذ ہے اور رابطے منقطع ہیں،حکومت پاکستان سفارتی سطح پر اپنی کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے اور خود بھارت سوچ رہا ہوگا کہ یہ بھارت نے بڑی غلطی کی ہے کیونکہ کشمیر میں جو لوگ باہر نکل کر آئے ہیں اور ہندووستان میں بھی اقلیتیں سراپا احتجاج ہیں ،اب یہ مسئلہ حل ہو کر رہے گا،میں خود بھی ہر فورم پر جا کر مسئلہ کشمیر  کے حل کے لئے آواز اٹھاؤنگا اور میں اپنے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب میں بھی کشمیر پر بات کرونگا،بھارت نے نہ صرف مقبوضہ کشمیر میں مسلسل کرفیو لگایا ہوا ہے بلکہ سئیز فائر لائن پر بھی فائرنگ کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے۔

ان خیالات کا اظہار صدر پاکستان ڈاکٹر عارف علی نے یہاں ایوان صدر اسلام آباد میں آزا د کشمیر کے سابق وزیر اعظم و پی ٹی آئی کشمیر کے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری سے ایک تفصیلی ملاقات میں کیا۔اس موقع پر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کو مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال پر تفصیلی بریفنگ دی اور دنیا بھر میں کشمیریوں کے مظاہروں اوراس سلسلے میں اپنی دیگر کوششوں سے آگاہ کیا۔اس موقع پر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے حکومت پاکستان کا مسئلہ کشمیر کو جاندار انداز میں سفارتی محاذ پر اٹھنے پر شکریہ ادا کیا۔انھوں نے کہا کہ آر ایس ایس بنیادی طور پر ہٹلر کے فاش ازم سے متاثر ہے اور اسی بنیاد پر بھارت میں ہندو اکثریت نے اقلیتوں پر مظالم کے پہاڑ ڈھائے ہوئے ہیں تاکہ  بھارت میں ہندوو فاش ازم قائم کیا جائےجبکہ بھارت کے اس اقدام سے پوری دنیا میں بھارت کو سبکی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔

مزید : قومی


loading...