ہٹلرکی سوچ والی مودی سرکار سےدنیا شدید خطرےمیں آسکتی ہے،احتساب کے جاری عمل سے مطمئن نہیں:صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

ہٹلرکی سوچ والی مودی سرکار سےدنیا شدید خطرےمیں آسکتی ہے،احتساب کے جاری عمل ...
ہٹلرکی سوچ والی مودی سرکار سےدنیا شدید خطرےمیں آسکتی ہے،احتساب کے جاری عمل سے مطمئن نہیں:صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہےکہ ہٹلرکی سوچ والوں سےدنیا شدید خطرےمیں آسکتی ہے،مسئلہ کشمیرپربھارت نےوعدوں کاپاس نہیں کیا،مودی سرکار اس آگ سے مت کھیلے یہ بڑی تباہ کن ہے،بھارت میں مسلمانوں پر دباؤڈالاجارہا ہے،مسئلہ کشمیرپرمتعددممالک کواپناحمایتی بناناپڑےگا،آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع مناسب فیصلہ ہے،تحریک انصاف  چاہتی ہے کہ پاکستان فلاحی ریاست بنے،مجھے بالکل اندازہ نہیں تھا کہ ملکی معیشت کا اتنا برا حال ہے؟یہاں توپورااحتساب ہوتانظرنہیں آرہا، ملک میں جاری احتساب کے عمل  سےبالکل بھی مطمئن نہیں ہوں۔

نجی ٹی وی  چینل’’ نیوز ون‘‘ کے پروگرام’’پرائم ٹائم ودٹی ایم‘‘میں خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے  صدرمملکت   ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ وہ ملک میں جاری احتساب کے عمل  سے بالکل بھی مطمئن نہیں ہیں ،جتنا ملک میں   کھایا گیا ہے اس سے کہیں زیادہ احتساب ہونا  چاہئے،آپ سوچیں ملک کہاں پہنچ گیا ہے ؟دنیا بھر میں ملک کو  ذلت اور خوارگی کی طرف لے گئےہیں تو کیا  احتساب ہوا ہے ؟ملک میں اتنی کرپشن رہی ہے کہ اگر میں اپنی زندگی میں آپ کو گنوانا چاہوں کہ کہاں کہاں مجبورا مجھے رشوت دینی پڑی تو سارا دن بیٹھ کر بتانا پڑے گا کہ یہاں ،یہاں میں نے رشوت دی،احتساب تو اللہ میاں کے ہاں ہوگا یہاں تو پورا نہیں ہو گا لیکن بڑے لوگوں کو پکڑ کر بڑا احتساب تو کر لیں تاکہ لوگ ڈرنے لگیں۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ بھارت میں مودی سرکارنےمسلم منافرت پیداکی،مودی سرکار کو ایوان صدر سے اگرکوئی امن اورسلامتی کا کوئی پیغام جا  سکتا ہے تو انہیں میراپیغام ہے کہ اس آگ کے ساتھ مت کھیلو یہ بڑی تباہ کن ہے،مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت تبدیل کرنے  کے بعد مجھے لگتا یہ ہے کہ جب وہاں ری ایکشن ہو گا تو پاکستان پر الزام تراشی کی جائے گی ،ہم دونوں ملک ایٹمی طاقت ہیں ،میں دنیا کو آگاہ کرنا چاہتا ہوں کہ جو سرکار  ہٹلر اورنازی فلسفے سےمتاثر ہے اور گجرات کے اندر سکولوں کے نصاب میں ہٹلرکی تاریخ موجود ہے ،اس سرکار کے  ہاتھ میں جب نیو کلیئر بٹن آئے گا تو اس سے دنیا کو خطرہ ہیروشیما اور ناگا  ساکی سے زیادہ ہو گا ۔صدر ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ ایران کے حوالےسےپاکستان پردباؤرہا ہے تاہم اب پاکستان کےہمسایہ ممالک سےتعلقات بہتر ہو رہے ہیں اور ایران کے ساتھ بھی اچھے تعلقات ہیں،پاکستان کاافغان امن میں انتہائی اہم کردارہے،پاکستان نےافغان مہاجرین کی مہمان نوازی کی جبکہ بھارت نےہمیشہ افغان مسئلےمیں دخل اندازی کی،افغانستان کےمعاملات میں بھارت کاکوئی رول بنتاہی نہیں ہے ، افغان مسئلے کاحل پاکستان کے مفاد میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارت میں مسلمانوں کودباؤڈالاجارہاتھا،مسلم منافرت کی کیفیت بھارت میں چل رہی تھی،وزیر اعظم عمران خان نےبھارت سےکہاتھاآپ ایک قدم اٹھائیں ہم2قدم اٹھائیں گے ،ہم نےبھارت کاپائلٹ بھی واپس کیا،ہٹلرکی سوچ والوں سےدنیاخطرےمیں آسکتی ہے ، ہٹلر سے متاثر سرکار تباہ کن صورتحال پیداکرناچاہتی ہے  ، بھارت پاکستان پرمسلسل الزام تراشی کرتارہتاہے،بھارت میں مودی سرکارنےمسلم منافرت پیداکی،کشمیریوں سے بچا کچھا ریلیف بھی لےلیاگیا ہے،کوئی بھی کشمیری بھارت کے حق میں نہیں ہے،اصولاًتقسیم کےوقت مسلم اکثریتی ریاست پاکستان کےپاس آنی تھی،مقبوضہ کشمیرمیں کئی لاکھ افراد  شہید  ہو چکے ہیں ،مسئلہ کشمیرپربھارت نےوعدوں کاپاس نہیں کیا،قوم سوشل میڈیاپرمقبوضہ وادی میں بھارتی مظالم کرپرچارکرے۔ایک  سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ  آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع مناسب فیصلہ ہے ، مشاورت کےبعدآرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع ہوئی۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ میں  ملکی مسائل کے حل کے بارےمیں سوچتارہتاتھا ،کبھی صدربننےکاسوچانہیں تھا،2013سےجلسوں میں دیکھاعوام تبدیلی چاہتےہیں،کراچی میں جان ہتھیلی پررکھ کرسیاست کی،کراچی میں سیاست کرنے کیلئے  خطرات مول لینےپڑتےہیں،ہمیں دھمکیاں بھی دی گئیں،پرانی والی ایم کیوایم کا مقابلہ کیا،میرےگھرپرفائرنگ بھی ہوئی لیکن متحدہ اب بدل گئی ہے،ایم کیوایم سے اتحاد ہونے  کاکوئی امکان نہیں تھا،سوشل میڈیاکی پہلےلوگوں کوسمجھ نہیں تھی،میڈیاکےبغیرعوام تک بات نہیں پہنچ سکتی،ہمیں معلوم تھادھاندلی کامقابلہ کرنےکی پوری کوشش کرنی ہے،پی ٹی آئی سوشل میڈیامیں تبدیلی لیکرآئی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بہت ہی عظیم قوم بننےجارہی ہے،مجھے بالکل اندازہ نہیں تھا کہ ملکی معیشت کا اتنا برا حال ہے؟ہم نےکہاتھاکہ قرضے نہیں لیں گےمگرلینےپڑے اور آج تک طعنے سن رہے ہیں،وقت اورحالات کےساتھ فیصلےبدلناپڑےہیں،پی ٹی آئی چاہتی ہےپاکستان فلاحی ریاست بنے،دیانتداری وہ فلسفہ ہےجس کو پکڑ کر رکھنا ہے ، صحت اورتعلیم بنیادی چیزیں ہیں جن پرتوجہ دیناہے۔انہوں نے کہا کہ صدرٹرمپ کی وزیراعظم عمران خان سےاچھی ملاقات ہوئی،معاشی طورپرکمزورصحیح لیکن دنیاسےدفاعی اندازمیں بات کرناچاہتےہیں۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...