سندھ دشمنی کے فتوے لگانے والے شہر کو تقسیم کررہے ہیں،خرم شیر 

سندھ دشمنی کے فتوے لگانے والے شہر کو تقسیم کررہے ہیں،خرم شیر 

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)پاکستان تحریک انصاف کراچی کے صدر و رکن سندھ اسمبلی خرم شیر زمان نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے احتجاج این آر او مانگنے کے بہانے ہیں۔عوام نے احتجاج میں شرکت نہ کرکے پی پی کی لسانی سوچ کو رد کردیا۔سندھ کے خلاف سازش خود پیپلزپارٹی کررہی ہے۔لسانیت کی سیاست کو فروغ دینے والی پی پی کو ناکامی ہوگی۔سندھ کے نام پر اب لوٹ مار اور بیڈگورننس چلنے نہیں دیں گے۔ان خیالات کا اظہار خرم شیر زمان نے انصاف ہاوس سے جاری اپنے بیان میں کیا۔ خرم شیر زمان کا مزیدکہنا تھا کہ کاش پی پی سندھ میں روٹی کپڑا مکان کے لیے احتجاج کرتی،کاش پی پی کراچی میں پانی کی قلت پر احتجاج کرتی۔سندھ کے لوگوں کو کتوں سے کٹوانے اور ایڈز لگوانے والے آج حقوق کی بات کررہے ہیں۔18 ویں ترمیم پی پی کے لیے کرپشن کی ترمیم بن چکی ہے۔ہم سندھ کے بیٹے ہیں سندھ کی عوام کو ہم جوابدہ ہیں۔سندھ کی عوام بے فکر رہے جیالوں کو اب سندھ کارڈ کے پیچھے چھپنے نہیں دیں گے۔ سندھ کی عوام اب اپنے حقوق کے لیے عمران خان کی طرف دیکھ رہی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ سندھ حکومت کی جانب سے کراچی اور لاہور کا مقابلہ کرنے کی بجائے12 سال اور 2 سالہ حکمرانی کا کردار بتایا جاتا تو بہتر ہوتا۔ بلاول زرداری اور ان کے حواری ہمارے ساتھ لاہور اور کراچی کا دورہ کرلیں فرق سمجھ آجائے گا۔جنہوں نے آج تک کراچی کی سڑکیں نہیں دیکھی ہونگی وہ آج لاہور کی باتیں کررہے ہیں۔ لاہور میں بارش سے پہلے اور بارش کے دوران تمام ادارے سڑکوں پر تھے۔ سندھ حکومت کے ترجمان تھرپارکر میں لگائے گئے 750 آر او پلانٹ بھول چکے ہیں۔میڈیا اور اداروں پر تنقید کے بجائے سندھ حکومت اپنی کارکردگی بہتر بناتی۔ فیڈریشن کی علامت سمجھی جانے والی جماعت اب لسانیت کی جماعت بن چکی ہے۔سندھ دشمنی کے فتوے لگانے والے خود اس شہر کو تقسیم کررہے ہیں۔نیا ضلع بناکر اپنے دامادوں رشتہ داروں کو عہدوں پر لگانا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ پیپلز پارٹی نے پچھلے بارہ سالوں میں کراچی کے 6 اضلاع کو تباہ کردیا۔پی پی نئے ضلعے سے نئی فنڈنگ اور مال بنانے کے نیا راستہ اختیار کررہی ہے۔پی پی عوام کی بہتری کے لیے کبھی نیا ضلع نہیں بنائے گی۔فنڈز کے نام پر لوٹ کھسوٹ پیپلز پارٹی کے منشور کا حصہ ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -