حادثات میں 8افراد جاں بحق، خاتون سمیت 3کی خودکشی 

      حادثات میں 8افراد جاں بحق، خاتون سمیت 3کی خودکشی 

  

 ملتان، خانیوال، وہاڑی،بوریوالا، کبیروالا، مظفرگڑھ، رحیم یارخان (وقائع نگار، نمائندگان پاکستان) حادثات میں 8افراد جاں بحق ہوگئے جبکہ3نے خود کشی کرلی کالے یرقان نے بھی ایک شخص کی جان لے لی تفصیل کے مطابق تھانہ مظفر آباد کے علاقے ٹریفک حادثہ میں 16سالہ نوجوان دم توڑ گیا جبکہ 12سالہ کو تشویشناک حالت میں نشتر ہسپتال منتقل کیا گیا ہے۔تفصیل کے مطابق ٹھٹھی لال کا رہائشی دلبر اپنے دوست فاروق کے ہمراہ موٹرسائیکل پر سوار ہوکر جارہے تھے کہ نواب ہوٹل کے قریب کٹ کراس کرتے ہوئے سامنے سے آنے والے تیز رفتار ٹرک کی ٹکر سے دونوں شدید زخمی ہوگئے جن میں سے دلبر زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر ہی خالق حقیقی سے جاملا جبکہ فاروق کو ریسکیو1122کی مدد سے (بقیہ نمبر40صفحہ7پر)

تشویشناک حالت میں نشتر ہسپتال داخل کروایا گیا اور ٹرک ڈرائیور موقع سے فرار ہوگیا، واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر معاملہ کے متعلق تفتیش شروع کرتے ہوئے دلبر کی نعش ضروری کاغذی کارروائی مکمل کرنے کے بعد ورثا کے حوالے کردی اور ٹرک ڈرائیور کے خلاف کارروائی کا آغاز کردیا ہے۔ تھانہ گلگشت کے علاقے خودکشی کی کوشش کرنے والا 42سالہ شخص نشتر ہسپتال میں دم توڑ گیا ہے۔تفصیل کے مطابق شاہ فیصل کالونی کا رہائشی محمد تنویر نے گھریلوں ناچاقی سے تنگ ا?کر زندگی کا خاتمہ کرنے کے لئے گندم والی گولیاں کھالی جس کی وجہ سے حالت غیر ہونے پر نشتر ہسپتال داخل کروایا گیا جہاں دوران علاج زندگی کی بازی ہارگیا، متعلقہ پولیس نے تنویر احمد کی نعش تحویل میں لیکر پوسٹ مارٹم کے بعد اہل خانہ کے حوالے کردی گئی ہے اور واقعہ کے متعلق تفتیش شروع کردی ہے۔ تھانہ شاہ رکن عالم کے علاقے ٹرین حادثہ میں 32سالہ شخص جاں بحق ہوگیاہے،پولیس نے موقع پر پہنچ کر تفتیش شروع کردی ہے۔تفصیل کے مطابق لاہور سے کراچی جانے والی ڈاون ٹرین کا حادثہ کے سبب نامعلوم شخص کافی زخمی ہوگیا جو موقع پر ہی زندگی کی بازی ہار گیا، واقع کی اطلاع پر متعلقہ پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر نامعلوم شخص کی نعش تحویل میں لیکر نشتر ہسپتال کے سرد خانے منتقل کردی گئی،پولیس کے مطابق نعش نامعلوم شخص کی ہے جس کی شناخت نہ ہوسکی ہے تاہم معاملہ کی چھان بین کررہے ہیں اصل حقائق معلوم ہونے پر منظر عام پر لاکر ذمہ داران کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔2موٹرسائیکلوں کے مابین تصادم کے نتیجہ میں بیٹا جاں بحق جبکہ ماں زخمی ہوگئی تفصیل کے مطابق گزشتہ روز خانیوال کے علاقہ مہر شاہ کے قریب 2موٹرسائیکلوں کے مابین تصادم کے نتیجہ میں بیٹا عرفان ولد لطیف موقع پر جاں بحق ہوگیا جبکہ اس کی ماں رمضان بی بی زوجہ لطیف سکنہ 114/15Lزخمی ہوگئی جسے ریسکیو1122نے طبی امداد کے لئے ہسپتال منتقل کردیا۔دو مختلف حادثات میں 2 افراد جان سے ہاتھ دھو بیٹھے جبکہ دو افراد شدید زخمی ہوگئے ریسکیو ذرائع کے مطابق کچی پکی روڈ پر کار کی موٹر سائیکل کو ٹکر کے نتیجہ میں منیر نامی شخص جاں بحق جبکہ اس کا ساتھ شدید زخمی ہوگیاریسکیو ٹیم نے نعش اور زخمی کو ہسپتال منتقل کر دیا اسی طرح دوسرے حادثہ میں ملتان روڈ اڈا گڑھا موڑ کے قریب کار کی موٹر سائیکل کو ٹکر کے نتیجہ میں صدیق آباد کا رہائشی 35 سالہ عبدالروف ولد قادر خاں  موقع پر جاں بحق ہوگیا جبکہ گڑھا موڑ کا رہائشی 24 سالہ عمیر ولد محمد اشرف زخمی ہوگیا جسے ابتدائی طبی امداد دے کر آر ایچ سی گڑھا موڑ منتقل کیا گیا متعلقہ تھانوں کی پولیس نے بھی موقع پر پہنچ کر اپنی کاروائی کی۔ پولیس تھانہ حویلی کورنگامیں بجرم 379کے درج مقدمہ نمبری 274/20کی مدعی پارٹی کے افراد ظہور اسماعیل عرف مانو شاہ،عبدالشکور ولد نور قوم گل اور فوجی اسلم تجراسدھوکانویں تحصیل کبیروالا سے ایک موٹر سائیکل پر سوار آفس ڈسٹرکٹ پولیس ّفیسر خانیوال  میں ایس پی انویسٹی گیشن خانیوال کے پاس اپنے مقدمہ کی تفتیش کیلئے جارہے تھے کہ لاہور موڑ خانیوال سے نصف کلو میٹر پہلے کار میں سوار مقدمہ نمبر274/20کے ملزما ن تصدق حسین شاہ،حیدر حسین شاہ،مظہر حسین شاہ ولد اکبر شاہ،طارق حسین شاہ ولدفتح شاہ نے مبینہ طور پر ان کا تعاقب شروع کردیا اور لاہور موڑ خانیوال پر ملزمان نے اپنی کار،جسے تصدق حسین شاہ چلارہا تھا،ا سے مدعی پارٹی کی موٹر سائیکل کو ٹکر دے ماری،جس سے وہ تینوں موٹر سائیکل سوار سڑک پر جاگرے،اسی اثناء میں سامنے سے آنے والے تیزرفتار ٹرالر نے انہیں روند ڈالا،جس کے نتیجے میں عبدالشکور موقع پر جبکہ ظہور اسماعیل عرف مانوشاہ نشتر ہسپتال ملتان جاتے ہوئے شدید زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جان بحق ہوگیا اور فوجی اسلم تجراکی حالت تشویشناک ہے۔دستیاب ذرائع کے ملزمان اور مدعی پارٹی کے مابین مقدمہ بازی کی وجہ سے شدید عداوت موجود تھی،موقع پر جان بحق ہونے والے عبدالشکور گل نے بھی ملزمان کے خلاف ایک درخواست کارروائی کیلئے پولیس تھانہ حویلی کورنگا کو دے رکھی تھی،جس کی گزشتہ شب تھانہ حویلی کورنگا میں تفتیش ہوئی،جس کے بعد ملزمان نے درخواست گزار عبدالشکور کو مبینہ طور پر سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکیاں دی تھیں،پولیس تھانہ کہنہ نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر قانونی کارروائی شروع کردی ہے،واقعہ میں استعمال ہونیوالی کار کو قبضے او ر 2ملزمان حراست میں لینے جانے کی اطلاعات ہیں،ذرائع کے مطابق ملزمان کو جان بحق ہونیوالوں کے دیگر ہمراہیوں نے پکڑ کرپولیس کے حوالے کیا ہے۔ خان گڑھ میں گھریلو جھگڑے پر شادی شدہ شخص نے زہریلی گولیاں کھا کر خودکشی کر لی, خان گڑھ کی بستی عاربی نزد نوری عیدگاہ کے رہائشی دو بچوں کے باپ رضوان احمد عاربی نے گھریلو تنازعہ سے دل برداشتہ ہو کر گندم میں رکھنے والی گولیاں کھا لیں, جس سے اس کی حالت بگڑ گئی اور وہ ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ ٹریفک حادثے میں شدید زخمی ہونے والا 10 سالہ کمسن بچہ ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ تفصیل کے مطابق آباد پور کا رہائشی 10 سالہ محمد فیاض اپنے رشتے دار کے ہمراہ موٹر سائیکل پر سوار ہو کر جا رہا تھا کہ تیز رفتاری کے باعث موٹر سائیکل سلپ ہو گیا اور وہ سر کے بل سڑک پر جا گرا اور شدید زخمی ہو گیا‘ ورثاء  نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہو پایا اور دم توڑ گیا۔گھریلو جھگڑوں اور مالی پریشانیوں سے دلبرداشتہ ہوکر 20 سالہ دوشیزہ نے کالاپتھر پی کرخودکشی کرلی‘ 5 افرادکا اقدام خود کشی‘ ہسپتال منتقل۔تفصیل کے مطابق خانپور کی رہائشی 20 سالہ اسماء  بی بی نے آئے روز کے گھریلو جھگڑوں اور مالی پریشانیوں سے دلبرداشتہ ہوکر کالا پتھر پانی میں گھول کر پی لیا‘ حالت غیر ہونے پرورثاء  نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہوپائی اور دم توڑگئی‘ اقدام خودکشی کرنے والے 5 افراد پیر علی محمد سلطان کی 20 سالہ رخسانہ بی بی‘ چک عباس کی 35 سالہ شریفاں بی بی‘ میانوالی قریشیاں کا 40 سالہ عظیم‘ کوٹ فقیرا کا 30 سالہ غلام اصغر اور چک 240 کے 30 سالہ دلبر کو ہسپتال میں طبی امداد فراہم کی جارہی ہے۔کالے یرقان میں مبتلا 65 سالہ خاتون ہسپتال میں دم توڑ گئی۔ تفصیل کے مطابق چوک ماہی کی رہائشی 65 سالہ جیون مائی کو کالے یرقان میں مبتلا ہونے پر ورثاء  نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہوپائی اور دم توڑگئی۔

حادثات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -