ممبر اقلیتی امور کمار کی سربراہی میں ڈپٹی کمشنر صوابی سے ملاقات

ممبر اقلیتی امور کمار کی سربراہی میں ڈپٹی کمشنر صوابی سے ملاقات

  

صوابی (بیورورپورٹ) وزیرِ اعلیٰ خیبرپختونخواہ کے کوآرڈینیٹر برائے اقلیتی امور,ممبر صوبائی اسمبلی خیبرپختونخواہ روء کمار نے اقلیتی نمائندگان کے وفد کے ہمراہ ڈپٹی کمشنر صوابی شاھد محمود سے ان کے آفس میں ملاقات کی اور ان کو ضلع صوابی میں اقلیتی برادری کے ایشوز کے متعلق اگاہ کیا,صوابی میں عیسائی کمیونٹی کیلئے قبرستان کی زمین کی الاٹمنٹ پر تاخیری حربوں پر تحفظات کا اظہار کیا اور جلد از جلد اراضی فراہمی کا مطالبہ بھی کیا, اسی طرح انہوں نے وفد کے ہمراہ,محکمہ سی اینڈ ڈبلیو,محکمہ بلدیات (ٹی ایم اے صوابی), ایریگیشن,ایجوکیشن اور ڈی ایچ کیو ھسپتال صوابی میں میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر سرتاج علی شاہ سمیت مذکورہ ضلعی محکموں کے ھیڈ آف دی ڈیپارٹمنٹس سے بھی ملاقاتیں کیں اور اقلیتی برادری کی سرکاری نوکریوں میں 5% کوٹہ کی تفصیلات بھی طلب کی اور اسی سلسلے میں خالی نشستوں پر اقلیتی برادری کی بھرتیوں کی ڈیمانڈ بھی کی۔ اس دورہ کے دوران محکمہ ایجوکیشن صوابی (فی میل) کے دفتر میں ایک کلرک  نے اقلیتی برداری کے اس نمائندہ وفد سے بدتمیزی بھی کی اور ان کو ضروری ریکارڈ دینے سے بھی انکار کیا۔ایم پی اے روی کمار نے اس موقع پر واضح کیا کہ وزیرِ اعلیٰ خیبرپختونخواہ محمود خان,وزیراعظم پاکستان عمران کی خصوصی ھدایات پر صوبہ خیبرپختونخواہ میں موجود اقلیتی برادری کے جائز مسائل کے حل کیلئے کوشاں ہیں اور اس سلسلے میں سی ایم خیبرپختونخواہ  نے ان کو سپیشل ٹاسک بھی دیا ھے,جس میں صوبہ بھر کے تمام مائنوریٹیز کے بنیادی و ضروری مسائل کے حل کیلیے عملی اقدامات پر زور دیا گیا ھے۔ ایم پی اے روی کمار نے کہا کے دینِ اسلام میں اقلیتی برادری کے بنیادی انسانی حقوق کی پاسداری اور ان کی جان و مال کے تحفظ کا ذکر ھے,تاہم پرائم منسٹر آف پاکستان عمران خان بھی اسی فلسفہ پر کاربند ھیں اور پاکستان میں مائنوریٹیز کے حقوق کے حقیقی علمبردار بھی ھیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -