منی لانڈرنگ کیس، احتساب عدالت نے شہباز شریف اور حمزہ کو 27اگست کو طلب کر لیا 

  منی لانڈرنگ کیس، احتساب عدالت نے شہباز شریف اور حمزہ کو 27اگست کو طلب کر ...

  

 لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت نے میاں شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کیس میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف اور ان کے صاحبزادے اپوزیشن لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کو 27 اگست کو طلب کرلیاہے،عدالت نے میاں شہباز شریف کی اہلیہ نصرت عباس اور دونوں بیٹیوں پر لگائے گئے الزامات سے متعلق تفتیشی افسر کو عدالتی معاونت کے لئے، نیب کے تفتیشی افسر کو بھی ذاتی حیثیت میں جبکہ شریک ملزمان نثار احمد، قاسم قیوم اور راشد کرامت،مسرور انور، محمد عثمان، فضل داد عباسی اور شعیب قمر کوبھی عدالت میں طلب کرلیا ہے،عدالت نے تفتیشی افسر سے سلمان شہباز، نصرت شہباز، رابعہ عمران اور جویریہ علی پر الزامات کی وضاحت طلب کرلی ہیں کہ تفتیشی افسر آئندہ سماعت پر بتائیں کہ جو ملزمان گرفتار نہیں ہوئے ان پر الزامات کی نوعیت کیا ہے؟تفتیشی افسر یہ بھی بتائیں کہ یہ ملزمان گرفتار کیوں نہیں ہوئے اوران ملزمان نے انویسی گیشن جوائن کی یا نہیں؟احتساب عدالت کے ایڈمن جج جواد الحسن نے میاں شہباز شریف، حمزہ شہباز، نصرت شہباز، سلمان شہباز سمیت 16 ملزمان کے خلاف ریفرنس پر سماعت کی،کیس کی سماعت شروع ہوئی تو نیب کے پراسیکیوٹر عاصم ممتاز عدالت میں پیش ہوئے،فاضل جج نے دوران سماعت نیب کے پراسیکیوٹر سے استفسار کیا کہ اس ریفرنس میں کتنے ملزمان ہیں؟جس پر نیب کے پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ اس میں 16 ملزمان ہیں، فاضل جج نے استفسار کیا کہ کتنے ملزمان گرفتار ہیں؟نیب کے پراسیکیوٹر نے کہا کہ منی لانڈرنگ کیس میں میاں شہباز شریف عبوری ضمانت پر ہیں، ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز جیل میں ہیں جبکہ دیگر ملزموں میں قاسم قیوم، نثار احمد سمیت شریک 6 ملزمان بھی جیل میں ہیں،ایک ملزم محمد عثمان نیب کی حراست میں ہے، نیب کے تفتیشی افسرحامد جاویدنے عدالت میں بیان دیا کہ میاں شہباز شریف کی اہلیہ اور دونوں بیٹیوں کو طلبی کے نوٹس بھیجے لیکن وہ پیش نہیں ہوئے۔

احتساب عدالت

مزید :

صفحہ اول -