پسماندہ طبقات کو غذائیت بخش کھانے کی فراہمی ہمارامشن ہے، شاہدلون 

    پسماندہ طبقات کو غذائیت بخش کھانے کی فراہمی ہمارامشن ہے، شاہدلون 

  

لاہور(فورم رپورٹ،دیبا مرزا) چیئرمین اللہ والے ٹرسٹ شا ہد لو ن نے کہا ہے کہ ہم اپنے پلیٹ فارم کی تو سط سے سالانہ 8 لاکھ افراد کو کھانا کھلاتے ہیں۔ ہم اپنے نئے کھانے کے منصوبے، اسکول میں کھانے کے پروگرام مزید بڑھانے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ ہمارے ملک کے 40 فیصدبچے دائمی غذائیت کا شکار ہیں، پسماندہ طبقات کو غذائیت بخش کھانا فراہم کرناہمارا مشن ہے ۔اللہ والے ٹرسٹ نے کورونا وائرس ایمرجنسی کے دوران مرکزی راشن پیکنگ سنٹر قائم کیا جہاں راشن پیکنگ مارچ 2020 کے آخری ہفتہ میں شروع کی گئی، ہم نے اپنے دسترخوان میں لوگوں میں پکا ہوا کھانا پیک کر کے تقسیم کیا،لاک ڈاؤن سے متاثرہ مزدوروں، دیہاڑی دار، رکشہ ڈرائیوروں اور ضرورت مند خاندانوں میں راشن پیک تقسیم کیے۔ہم نے خاص طور پر عیسائی برادری، ہندو، اور خواجہ سرااور دیگر برادریوں میں بھی راشن پیک تقسیم کئے ان خیالات کا اظہار ”پاکستان“ فورم میں اللہ والے ٹرسٹ کے روح رواں چیئرمین شاہد لون نے گفتگو کر تے ہو ئے کیا۔انہوں نے کہا کہ کھانے کے مختلف پروگراموں میں توسیع کی ہے، جس میں لوئر اسٹاف، بچوں کے اسکول، اسپتالوں، ریلوے اسٹیشن پرقلیوں اور عام لوگوں میں کھانے کی تقسیم شامل ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ فوڈ بینک بھی شروع کیا ہے، جو غریب خاندانوں میں رعایتی ماہانہ راشن تقسیم کرتا ہے۔ مزید یہ کہ شادی کھانا پروگرام بھی شروع کیا گیا ہے جس میں مستحق اور غریب خاندانوں کی شادی کی تقریبات میں کھانا مہیاکیا جاتا ہے۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے دسترخوان کی جگہیں شہر میں مصروف مقامات پر منظم ہیں۔ ایسے مقامات جو بس اسٹینڈس اور ٹرمینلز، بازاروں، آٹو رکشہ اسٹینڈز اور مصروف سڑکوں کے قریب ہیں۔ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ اب تک ہم لاہور اور پاکپتن، رینالہ خورد (ضلع اوکاڑہ)، بہاول پور، رحیم یار خان، ڈیرہ غازی خان، تونسہ شریف، ننکانہ صاحب، فیصل آباد، وہاڑی،راولپنڈی، سرگودھا اور دیگر شہروں میں تقریبا 18,000راشن پیک تقسیم کر چکے ہیں ہم نے بیت المال پنجاب کے ساتھ 50/50 کے اشتراک سے مشترکہ راشن پروجیکٹ بھی شروع کیا۔ جس میں 50,000 افراد مستفید ہوئے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ہم نے ایکسپو سنٹر، لاہور میں کورونا فیلڈ ہسپتال کے مریضوں کے لئے 3 وقت کا کھانا بھی فراہم کر رہے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -