واں سال 1791سانپ سے متعلقہ ایمرجنسیزپر سروس فراہم کی، رضوان نصیر

  واں سال 1791سانپ سے متعلقہ ایمرجنسیزپر سروس فراہم کی، رضوان نصیر

  

لاہور(کر ائم رپو رٹر)ڈائریکٹر جنرل پنجاب ایمرجنسی سروس ڈاکٹر رضوان نصیر نے 2020 کے دوران پنجاب کے تمام اضلاع میں ریسکیو 1122 کی طرف سے رسپانڈ کی گئی سانپ سے متعلقہ ایمرجنسیز  کے اعدادوشمار کا جائزہ لیا۔ انہوں نے مشاہدہ کیا کہ جنوری 2020سے اب تک ریسکیو1122 کی سپیشل ریسکیو ٹیموں نے پنجاب بھر میں 1791سانپ سے متعلقہ ایمرجنسیزپر رسپانڈ کیا سب سے زیادہ سانپ گھروں میں گھسنے کے 154واقعات  صوبائی دارلحکومت لاہور میں رپورٹ ہوئے جبکہ ڈی جی خان میں سب سے زیادہ 128 سانپ کے گھروں میں گھسنے اور ڈسنے کے واقعات میں 105افراد متاثر ہوئے  اعداد و شمار سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ ضلع پاکپتن اور اوکاڑہ سب سے کم سانپ سے متعلقہ ایمرجنسیز پیش آئیں۔پنجاب میں ریسکیو ٹیموں نے سانپ کے ڈسنے سے510 متاثرین کو ہنگامی طبی امداد دیتے ہوئے ہسپتالوں میں منتقل کیا۔ جن میں سب سے زیادہ ڈیرہ غازیخان میں 105، راجن پور میں 52، ملتان میں 32، بھاولپوراور بھکرمیں 25متاثرین کو سروسز فراہم کی گئیں جبکہ ضلع گجرات اور سرگودھا صرف ایک ایک سانپ کے ڈسنے کی ایمرجنسیرپورٹ ہوئی انفارمیشن ونگ نے ڈی جی ریسکیو کو آگاہ کیا کہ ریسکیو ٹیم لاہورنے گڑھی شاہوکے علاقہ صدیق کالونی کے ایک گھر سے  6 فٹ 11انچ پائتھن نسل کے اژدھا کو پکڑتے ہوئے اہل خانہ کو اس کے متوقع خطرے سے بچالیا ڈرٹ ریسکیورز جہانگیر اور شہبازنے خرم شہزاد ریسکیو ڈرائیور کے ہمراہ کمانڈ اینڈ کنٹرول روم لاہور کے حکم پر اس ایمرجنسی پررسپانڈ کیا۔ 

اور  پیشہ ورانہ صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئیریسکیو ٹیم نے اسے نہایت احتیاط بغیر کوئی نقصان پہنچائے چندمنٹوں میں اس ا?دھے کو پکڑ لیا اور گھر کے مکینوں کو اسکے ممکنہ خطرات سے بچالیا۔بعد ازاں ا?دھے کوریسکیو اسٹیشن لایاگیا جہاں سے اس پائتھن کو چڑیا گھر کی انتظامیہ کے حوالے کر دیا گیا۔ ڈی جی ریسکیو نے ریسکیو ٹیم کی جرات اور پیشہ ورانہ کارکردگی کو سراہا اورشاباش دی۔ انہوں شہریوں سے اپیل کی کہ سانپ نظر ا?نے پر شوروغوغا نہ کریں بس اتنی احتیاط کریں کہ سانپ کے قریب نہ جائیں اور فوری طور پر ریسکیوکے کالنگ نمبر1122پر اطلاع دیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اکثراوقات لوگ سانپ کے زہر کی بجائے اسکے خوف کی وجہ سے جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں۔

مزید :

علاقائی -