صدر شی جن پنگ چین پاک تعلقات کے فروغ کے خواہاں

صدر شی جن پنگ چین پاک تعلقات کے فروغ کے خواہاں
صدر شی جن پنگ چین پاک تعلقات کے فروغ کے خواہاں

  

سی پیک چین اورپاکستان کے چاروں موسموں کے تذویراتی شراکت داری کے تعلقات کو مستحکم کرنے اور دنوں ممالک کے عوام کے ہم نصیب معاشرے کے قیام کے مستقبل کے لئے بنیادی اہمیت کا حامل منصوبہ  ہے۔ چینی صدرشی جن پھنگ نے جمعہ کو کہا کہ دی بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو کے تحت  ایک بنیادی  منصوبے کے طور پر چین پاک اقتصادی راہداری (سی پی ای سی) چین اور  پاکستان  کے چاروں موسموں کے تذویراتی شراکت کے تعلقات کے فروغ کے لئے بہت اہمیت کا حامل  منصوبہ ہے۔ یہ منصوبہ  چین پاک ہم نصیب معاشرے  کے  قیام اور دونوں ممالک کے قریبی تعلقات کے قیام کے لئے بہت اہمیت کا حامل ہے۔ 

شی  جن پھنگ ، جو کہ چینی کمیونسٹ پارٹی  کی مرکزی کمیٹی کے جنرل سکریٹری بھی ہیں ، نے  ان خیالات کا اظہار پاکستانی صدر عارف علوی کے نام  زبانی پیغام میں کیا۔

شی جن پھنگ نے کہا کہ وہ اس حقیقت کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں کہ  پاکستان کے صدر عارف علوی نے چین پاک اقتصادی راہداری سیاسی پارٹیوں کے مشترکہ  مشاورت میکانزم کی دوسری کانفرنس کی افتتاحی تقریب کے موقع پر  ایک خط کے ذریعے تہنیتی پیغام بھیجا ، جس سے اس بات کا پوری طرح سے پتہ چلتا ہے کہ پاکستان کے صدرمملکت ڈاکٹر عارف  علوی  چین پاک اقتصادی راہداری کی تعمیر اور چین پاک تعلقات کو بہت زیادہ اہمیت دیتے ہیں۔ 

شی جن پھنگ نے نشاندہی کی کہ چین اور پاکستان اچھے بھائی اور خصوصی دوستی کے شراکت دار ہیں۔ چین پاک اقتصادی راہداری "دی بیلٹ اینڈ روڈ" کی تعمیر کا ایک اہم منصوبہ ہے۔ چین اور پاکستان کے تعلقات چاروں موسموں کے تزویراتی شراکت دار کے تعلقات ہیں۔ ان تعلقات کی ترقی اور فروغ دونوں ممالک کے مشترکہ مستقبل کی تعمیر کے لئے بہت اہمیت کا حامل ہے۔ چین اور پاکستان کی سیاسی جماعتیں اکثر دوستانہ مشاورت کرتی ہیں اور مستقل طور پر سیاسی اتفاق رائے پیدا کرتی ہیں ، جو چین پاک اقتصادی راہداری کی مستحکم اور طویل مدتی تعمیر اور " دی بیلٹ اینڈ روڈ" کی اعلی معیار کی مشترکہ تعمیر کو فروغ دینے کے لئے موزوں ہے۔

صدر شی جن پھنگ نے اس بات پر زور دیا کہ کووڈ-19 کی وبا کے مشترکہ عالمی جدوجہد نے یہ ثابت کردیا ہے کہ ممالک کے مابین صرف باہمی تعاون ، یکجہتی اور تعاون ہی اس وبا کو دور کرنے کا صحیح طریقہ ہے۔ چین چین پاکستان ہم نصیب سماج کی تعمیر کو مزید وسعت دینے ، خطے کے ممالک کے مابین اتحاد و تعاون کو مشترکہ طور پر فروغ دینے ، اور خطے میں امن و ترقی کے اچھے رجحان کو برقرار رکھنے کے لئے پاکستان کے ساتھ کام کرنے پر تیار ہے۔

اس سے قبل صدر عارف علوی نے چین پاکستان اقتصادی راہداری کے حوالے سے سیاسی جماعتوں کے مشاورتی طریقہ کار کے دوسرے اجلاس کے نام مبارکباد کا خط ارسال کیا۔ 20 اگست کو چین پاکستان اقتصادی راہداری کی سیاسی جماعتوں کے مشاورتی طریقہ کار کا دوسرا اجلاس ویڈیو لنک کے ذریعے منعقد ہوا۔

انہوں نے اس پیغام میں کہا کہ بنی نوع انسان  کے  ہم نصیب سماج کی تعمیر  کے لئے صدر شی جن پھنگ کی جانب سے پیش کردہ دی بیلٹ اینڈ روڈ انیشی ایٹو ایک نہایت قابل قدر اقدام ہے۔ اس سے  قدام نے اقوام عالم کے درمیان تعاون کے فروغ، بنی نوع انسان کی حقیقی ترقی  اور امن کے قیام میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ دی بیلٹ اینڈ روڈ دنیا بھر کے عوام کی آفاقی امنگوں کی عکاسی ہے۔ 

صدر عارف علوی نے کووڈ-19 کی وبا کے تناظر میں کہا کہ چین نے ایسے وقت میں پاکستان کی بروقت مدد کی جب وبا نے پاکستان میں تباہی پھیلا رکھی تھی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان چین کے ساتھ ثقافتی تبادلے اور باہمی اعتماد کے فروغ کے اس سفر کو جاری  رکھے گا ، چین کے ساتھ مشترکہ اہداف میں اشتراک کرے گا اور علاقائی امن و استحکام کو فروغ دینے کے لئے مشترکہ کوششیں کرے گا۔

واضح رہے چین پاک اقتصادی راہداری سیاسی جماعتوں کا مشترکہ مشاورت میکانزم 2019 میں سی پی سی اور پاکستان کی حکمران اور بڑی غیر حکمران جماعتوں کے مابین قائم کیا گیا تھا۔ جمعرات کو ، سی پی سی سیاسی جماعتوں کے مشترکہ مشاورت میکانزم کی دوسری کانفرنس ، جو سی پی سی سنٹرل کمیٹی کے بین الاقوامی محکمہ کے زیر اہتمام منعقد ہوئی ، ویڈیو لنک کے ذریعے منعقد ہوئی۔ 

۔

 نوٹ:یہ بلاگر کا ذاتی نقطہ نظر ہے جس سے ادارے کا متفق ہونا ضروری نہیں ۔

۔

اگرآپ بھی ڈیلی پاکستان کیساتھ بلاگ لکھنا چاہتے ہیں تو اپنی تحاریر ای میل ایڈریس ’zubair@dailypakistan.com.pk‘ یا واٹس ایپ "03009194327" پر بھیج دیں.

مزید :

بلاگ -