شاہد خاقان عباسی کی اکاﺅنٹ میں 560ملین کی ٹرانزیکشن غیرقانونی ہیں،نیب نے ایل این جی ضمنی ریفرنس میں سنگین الزامات عائد کردیئے 

شاہد خاقان عباسی کی اکاﺅنٹ میں 560ملین کی ٹرانزیکشن غیرقانونی ہیں،نیب نے ایل ...
شاہد خاقان عباسی کی اکاﺅنٹ میں 560ملین کی ٹرانزیکشن غیرقانونی ہیں،نیب نے ایل این جی ضمنی ریفرنس میں سنگین الزامات عائد کردیئے 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)قومی احتساب بیورو(نیب)نے ایل این جی کیس میں شاہد خاقان عباسی کیخلاف ضمنی ریفرنس میں سنگین الزامات عائدکردیئے۔ضمنی ریفرنس میں کہاگیا ہے کہ 29دسمبر2017کو شاہد خاقان عباسی کے اکاﺅنٹ میں ایئرلائن کی جانب سے 736 ملین منتقل ہوئے ،736ملین شاہد خاقان کو ملنے والی تنخواہ کے علاوہ تھے ،ایس ای سی پی نے 736میں سے 560ملین کی ٹرانزیکشن کو غیرقانونی قراردیا۔

نجی ٹی وی کے مطابق ضمنی ریفرنس میں الزامات عائد کئے گئے ہیں کہ غیرقانونی معاہدوں سے 21ارب روپے کانقصان ہوچکا ہے،من پسند کمپنیوں کوغیرقانونی ٹھیکوں سے 14 ارب روپے کافائدہ پہنچایاگیا ۔

ضمنی ریفرنس میں مزید کہاگیا ہے کہ 4سال تک دوسراٹرمینل فعال نہ ہونے سے ساڑھے7 ارب کانقصان ہوا،معاہدے سے آئندہ 10سال تک خزانے کو مزید 47ارب روپے کانقصان پہنچے گا۔

ضمنی ریفرنس میں کہاگیا ہے کہ 29دسمبر2017کو شاہد خاقان عباسی کے اکاﺅنٹ میں ایئرلائن کی جانب سے 736 ملین منتقل ہوئے ،736 ملین شاہد خاقان کو ملنے والی تنخواہ کے علاوہ تھے ،ایس ای سی پی نے 736میں سے 560ملین کی ٹرانزیکشن کو غیرقانونی قراردیا،شاہد خاقان عباسی نے وہی 560ملین واپس اپنے بیٹے کے اکاﺅنٹ میں منتقل کئے ۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -