ممکن ہے وہ دن آئے کہ دنیا مجھے سمجھے

ممکن ہے وہ دن آئے کہ دنیا مجھے سمجھے
ممکن ہے وہ دن آئے کہ دنیا مجھے سمجھے

  

ممکن ہے وہ دن آئے کہ دنیا مجھے سمجھے

لازم نہیں ہر شخص ہی اچھا مجھے سمجھے

ہے کوئی یہاں شہر میں ایسا کہ جسے میں 

اپنا نہ کہوں اور وہ اپنا مجھے سمجھے

ہر چند مرے ساتھ رہے اہلِ بصیرت 

کچھ اہلِ بصیرت تھے کہ تنہا مجھے سمجھے

آج میں سرِ آتشِ نمرود کھڑا ہوں

اب دیکھیے یہ خلقِ خدا کیا مجھے سمجھے

شاعر: رسا چغتائی

Mumkin Hai Woh Din AayeKeh Duniya Mujhe Samjhe

                     Laazim Nahi Har Shakhs Hi Achha Mujhe Samjhe

                                           Hai Koi YahaSheher Main Aisa Ki Jise Maiñ

                                        Apna Na Kahu Aur Woh Apna MujheSamjhe

                                          Har Chand Miray Saath rahay ehl  e  Baseerat

Kuch Ehl  e  BaseeratThay Keh Tanha Mujhay Samjhay

                               Aaj Main Sar  e  Aatish  e  Namrood  Kharra Hun

Ab Daikhiay Yeh Khalq  e  Khuda Kia Mujhay Samjhay

                                                                                                                      Poet: Rasa Chughtai

مزید :

شاعری -سنجیدہ شاعری -