30 مردوں کا نوعمر لڑکی کے ساتھ گینگ ریپ، اس کے بعد اُسے کیا پیشکش کی؟ ایسی خبر کہ انسانیت شرما جائے

30 مردوں کا نوعمر لڑکی کے ساتھ گینگ ریپ، اس کے بعد اُسے کیا پیشکش کی؟ ایسی خبر ...
30 مردوں کا نوعمر لڑکی کے ساتھ گینگ ریپ، اس کے بعد اُسے کیا پیشکش کی؟ ایسی خبر کہ انسانیت شرما جائے

  

تل ابیب(مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیل میں 30مردوں نے ایک ہوٹل میں 16سالہ لڑکی کو اجتماعی زیادتی کا نشانہ بناڈالا اور ان میں سے ایک مرد نے لڑکی کو یہ پیشکش کر دی کہ اگر لڑکی چاہے تو وہ اسے اس کے ساتھ ہونے والی درندگی کی ویڈیو بھیج سکتا ہے جو اس حیون صفت انسان نے بنائی تھی۔ میل آن لائن کے مطابق یہ انسانیت سوز واقعہ اسرائیل کے ساحلی سیاحتی شہر ایلیت کے ایک ہوٹل میں پیش آیا۔ لڑکی اس ہوٹل میں قیام پذیر نہیں تھی بلکہ اپنے کچھ دوستوں کے ہمراہ وہاں شراب پی رہی تھی۔ اس دوران وہ باتھ روم گئی جہاں سے کچھ مرد اسے اپنے کمرے میں لے گئے۔ 

رپورٹ کے مطابق لڑکی شراب کے نشے میں دھت تھی جس کی وجہ سے وہ مزاحمت بھی نہ کر سکی۔ پولیس کا کہنا ہے کہ لڑکی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے مرد زیادہ تر ایک دوسرے کو بھی نہیں جانتے تھے۔ پولیس نے 2ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے جن میں سے ایک نے بتایا کہ دو درجن سے زائد مرد کمرے کے باہر قطار بنا کر کھڑے رہے اور باری باری کمرے میں جا کر لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بناتے رہے۔ کئی مردوں نے اس لڑکی کے ساتھ اس بہیمانہ سلوک کی ویڈیوز بھی بنائیں اور ایک نے لڑکی کو بھی ویڈیو دینے کی پیشکش کی۔

 جب لڑکی کی حالت غیر ہوئی تو ایک مرد نے ڈاکٹر ہونے کا ڈرامہ کیا اور کہا کہ وہ لڑکی کو طبی امداد دینے جا رہا ہے۔ اندر جا کر اس نے بھی لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔ اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے اس واقعے کو انسانیت کے خلاف جرم قرار دیا ہے۔ پولیس نے لڑکی کے ٹیسٹ کروا لیے ہیں جن کی رپورٹ آنی ابھی باقی ہے۔رپورٹ کے مطابق لڑکی کے ایک دوست کا کہنا ہے کہ ”لڑکی کے ساتھ جو ہوا، اس کا صدمہ ایک طرف، اس وقت لڑکی کو سب سے زیادہ خوف اس واقعے کے دوران بنائی گئی اپنی ویڈیوز اور تصاویر کا ہے کہ اگر وہ انٹرنیٹ پر لیک ہو گئیں تو اس کی زندگی تباہ ہو جائے گی۔“

مزید :

بین الاقوامی -