مینار پاکستان واقعہ، گرفتار 40 ملزمان شناخت پریڈ کیلئے جیل منتقل 

مینار پاکستان واقعہ، گرفتار 40 ملزمان شناخت پریڈ کیلئے جیل منتقل 

  

لاہور(نامہ نگار)ضلع کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ عباس رسول وڑائچ نے گریٹراقبال پارک(مینار پاکستان)میں لڑکی سے بدتمیزی اور اسے ہراساں کرنے کے الزام میں گرفتار 40 ملزمان کو شناخت پریڈ کے لئے جیل بھجوانے کاحکم دے دیا،عدالت نے سپرنٹنڈنٹ جیل کو جلد از جلد شناخت پریڈ کے انتظامات مکمل کرنے کا بھی حکم دیا پولیس کی جانب سے گزشتہ روز گرفتار 40 ملزمان کو سخت سیکیورٹی میں عدالت میں پیش کیا گیا،پولیس کی جانب سے ملزمان کے چہرے ڈھانپ کر انہیں عدالت میں پیش کیا گیا، کیس کی سماعت شروع ہوئی تو تفتیشی افسر نے عدالت کو بتایا کہ واقعہ میں ملوث ملزمان کی گرفتاریوں کا عمل جاری ہے،متاثرہ لڑکی جیل میں ملزمان کی شناخت کریں گی، شناخت ہونے والے ملزمان کو جسمانی ریمانڈ کے لئے عدالت کے روبرو پیش کیا جائے گا،عدالت سے استدعاہے کہ ملزمان کو شناخت پریڈ پر جیل بھجوانے کاحکم دیاجائے،،ملزموں کے وکلاء نے موقف اختیارکیا کہ ملزمان کا اس واقعہ سے کوئی تعلق نہیں، پولیس نے غیر قانونی طور پر اس میں انہیں شامل کیاہے،عدالت سے اتتدعاہے کہ ٹک ٹاکر لڑکی کو بھی حراست میں لیا جائے،سب کچھ واضع ہوجائے گا،ملزمان کا واقع سے کسی قسم کا کوئی تعلق نہیں اور نہ ہی انہوں نے لڑکی سے کوء چھیڑ چھاڑ کی ہے،عدالت نے وکلاء کے دلائل سننے کے بعدگرفتار 40 ملزمان کو جیل بھجوانے کاحکم جاری کرنے کے ساتھ ساتھ سپرٹنڈنٹ جیل کو شناخت پریڈ کے انتظامات جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایت بھی کی ہے،ملزمان کو عدالتی سماعت کے بعدسخت سکیورٹی کے حصار میں جیل لے جایاگیا،اس موقع پر ملزمان سلمان خان اور دیگر کے والدین بھی عدالت میں پیش ہوئے۔

جیل بھجوانے کاحکم

مزید :

صفحہ اول -