تخت بھائی،پولیس مکان کے تنازعہ میں قتل کیس کے ملزمان کی گرفتاری بھول گئی

تخت بھائی،پولیس مکان کے تنازعہ میں قتل کیس کے ملزمان کی گرفتاری بھول گئی

  

 تخت بھائی (تحصیل رپورٹر)   کچھ عرصہ قبل شیر گڑھ کے نواحی گاؤں محمود شاہ بانڈا میں کرائے کے مکان کے تنازعہ ہے فائرنگ کے نتیجے میں قتل ہونے والے عبدالحق کے قتل کا ملزم تاحال گرفتار نہ کرنے کے خلاف شیرگڑھ کے نواحی گاؤں گل احمد کلے کے رہائشی روان خان کی رہائش گاہ پر ملیزئی قوم کا ایک احتجاجی احتماع منعقد ہوا جتماع میں تخت بھائی، شیرگڑھ،لوندخوڑ،ہاتھیان، درگئی، مردان اور دیگر علاقوں کے  ملیزے قوم کے باشندوں نے ساتھ بڑی تعداد میں شرکت کی احتجاجی اجتماع نے پولیس کو مقتول کے قتل کے ملزم کی گرفتاری کے لیے 15 روز کا الٹی میٹم دے دیا پولیس کے اعلیٰ حکام کے ساتھ رابطہ رکھنے اور اس معاملات طے کرنے کیلئے حکومتی ایم پی اے اے افتخار مشوانی کی سربراہی میں ایک 20 رکنی کمیٹی تشکیل دے دی گئی جبکہ کمیٹی کے وائس چیرمین ایم پی اے افتخار مشوانی کو معاون خصوصی چن لیا گیا احتجاجی اجتماع سے حکومتی ایم پی اے افتخار مشوانی سابق صوبائی وزیر فضل ربانی ایڈوکیٹ سابق صوبائی وزیر ملک جان زیب خان سابق ایم پی اے اے ملک بہرام خان ممتاز سیاسی رہنما معاصر میاں سردار یوسف وسماجی رہنماء میاں سردار یوسف باچہ اور مقتول کے فرزند نے خطاب کیا مقررین نے مقتول عبد الحق کے قاتل ملزم کو تا حال گرفتار نہ کرنے پر زبردست دست رنج و غم اور غصے کا اظہار کیا ایم پی اے افتخار مشوانی نے پولیس کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ مقتول کے ساتھ تعلق رکھنے والے جتنے بھی ملزم کے دوست احباب اور تخت دار ہیں ملزم تک رسائی حاصل کرنے کیلئے گرفتار کیا جائے ملزم کو پناہی دینے والے چن چن کر پابند سلاسل کر دیا جائے خواہ وہ کتنے ہی طاقتور کیوں نہ ہو انہوں نے نے مقتول عبدالحق کے فرزند کو ملزم کی طرف سے دھمکیوں کی اطلاعات کا سختی نوٹس لیا اور پولیس کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا اس سلسلے میں میں ملزم کے ساتھ دینے والے والوں ان کے سہولت کاروں گوری طور بلا امتیاز گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے احتجاجی  اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے خبردار کیا کہ اگر 15 روز کے اندر اندر پولیس نے مقتول کے قتل ملزم کو گرفتار نہ کیا تو پھر وہ مجبورا سڑکوں پر آکر احتجاج  کریں گے-

مزید :

پشاورصفحہ آخر -