کڑے وقت میں افغانستان کو ہر طرح کی مدد فراہم کی جائے ، او آئی سی نے بڑا اعلان کردیا 

کڑے وقت میں افغانستان کو ہر طرح کی مدد فراہم کی جائے ، او آئی سی نے بڑا اعلان ...
کڑے وقت میں افغانستان کو ہر طرح کی مدد فراہم کی جائے ، او آئی سی نے بڑا اعلان کردیا 

  

جدہ(محمد اکرم اسد)سعودی عرب کی سربراہی میں افغانستان کی صورتحال پر غور کرنے کے لیے اسلامی تعاون تنظیم ( او آئی سی)کا غیرمعمولی اجلاس جدہ میں ہوا جس میں عالمی برادری پر زور دیا گیا ہے کہ جنگ زدہ ملک میں انسانی ضروریات میں اضافہ ہو رہا ہے،اس لیے کڑے وقت میں افغانستان کو ہر طرح کی مدد فراہم کی جائے اور قیمتی جانوں کے ضیاع کو بچانے کے لیے ہرممکن اقدامات اٹھائے جائیں۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب نے دو روز قبل افغانستان کی تیزی سے بدلتی ہوئی صورت حال پر اسلامی تعاون تنظیم کا غیر معمولی اجلاس بلانے کی درخواست کی تھی ۔57 مسلم ممالک کی نمائندگی کرنے والی اسلامی تعاون تنظیم  کے سیکرٹری جنرل ڈاکٹر یوسف بن احمد العثمین نے کہا کہ افغانستان میں مذاکرات کی حمایت کرتے ہیں، افغانستان میں امن کے قیام اور شہریوں کی جان و مال کی حفاظت کے لیے اٹھائے گئے اقدامات کی حمایت کرتے ہیں۔

اس سے قبل سعودی مندوب نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب اور رکن ممالک افغان عوام کے ساتھ ہیں،ہم اس بات پر زور دیتے ہیں کہ افغان عوام کو بیرونی مداخلت کے بغیر اپنے مستقبل کا فیصلہ کرنے کا اختیار ہے۔انہوں نے کہا کہ سعودی عرب کو طالبان اور تمام افغان فریقوں سے امید ہے کہ وہ ملک میں امن و امان اور استحکام کو یقینی بنائیں گے،سعودی عرب اپنے تاریخی اور مستقل موقف کا اعادہ کرتے ہوئے اس بات پر زور دیتا ہے کہ افغانستان کا امن، استحکام اور اس کی یکجہتی  قائم کرنے کی ضرورت ہے،سعودی عرب عالمی برادری سے اپیل کرتا ہے کہ افغانستان میں انسانی بنیادوں پر امدادی کام کئے جائیں اور ملک کے امن و استحکام کے لیے کوشش کی جائے،عالمی برادری سمیت او آئی سی کے رکن ممالک افغانستان میں برسر اقتدار انتظامیہ سے امید کرتے ہیں کہ وہ مختلف طبقات کی نمائندہ قوتوں کے ساتھ افہام و تفہیم کی بنیاد پر قومی مصالحت پیدا کرے گی اور عالمی معاہدوں کا احترام کرے گی۔

مزید :

عرب دنیا -