نجی شعبہ گلگت بلتستان کیلئے فلائٹ آپریشن شروع کرے ، وزیر اعلٰی حافظ حفیظ الرحمن

نجی شعبہ گلگت بلتستان کیلئے فلائٹ آپریشن شروع کرے ، وزیر اعلٰی حافظ حفیظ ...

لاہور(کامرس رپورٹر) وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے نجی شعبے کو دعوت دی ہے کہ وہ گلگت بلتستان کی حکومت کے تعاون سے اس علاقہ کے لیے فلائٹ آپریشن شروع کرے۔ لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید، سینئر نائب صدر خواجہ خاور رشید اور نائب صدر ذیشان خلیل اور ایگزیکٹو کمیٹی اراکین سے لاہور چیمبر میں ملاقات میں وزیراعلیٰ گلگت بلتستان نے کہا کہ پی آئی اے کا گلگت بلتستان کے لیے فضائی آپریشن ضروریات پوری کرنے کے لیے کافی نہیں لہذا نجی شعبہ اس شعبے میں آگے آئے۔ انہوں نے کہا ہے کہ چین پاکستان اکنامک کاریڈور نے گلگت بلتستان کی اہمیت اور سرمایہ کاری و روزگار کے مواقعوں میں نمایاں اضافہ کیا ہے، وقت گزرنے کے ساتھ صورتحال مزید بہتر ہوتی چلی جائے گی۔ سی پیک نے اس خطے کو ایک نئی پہچان دی ہے، اس منصوبے کے تحت انڈسٹریل اور اکنامک زونز لگائے جارہے ہیں جو اس علاقے کے لوگوں کو خوشحال کریں گے۔ توانائی کے بارے میں انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان نیشنل گرڈ سے منسلک نہیں ، یہاں پہلے گرڈ سٹیشن کے قیام کے لیے کام ٹینڈر کی سطح پر ہے۔ ماضی میں دیامیر بھاشا پر سنجیدگی سے کام نہیں ہوا مگر اب صورتحال مختلف ہے، زمین کے حصول کا کام شفاف طریقے سے مکمل ہوچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 4500میگاواٹ، 7500میگاواٹ اور 5000میگاواٹ کے دیامیربھاشا، بونجی اور داسو منصوبوں کی تکمیل سے وافر سستی اور ماحول دوست بجلی پیدا کی جاسکے گی۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے گلگت بلتستان میں صحت و انفراسٹرکچر منصوبوں کے لیے بہت تعاون کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں سرمایہ کاری کرنے والوں سے ہر ممکن تعاون کیا جائے گا۔

لاہور چیمبر کے صدر ملک طاہر جاوید نے کہا کہ گلگت بلتستان کا خطہ سوشیو اکانومی، توانائی کی پیداوار ، معدنیا ت اور جغرافیہ ہر حوالے سے بہت اہم ہے۔انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت گلگت بلتستان میں انفراسٹرکچر اور توانائی کے حوالے سے بہت بہتری آئے گی، کچھ میگا ڈویلپمنٹ پراجیکٹس پہلے ہی شروع ہوچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں آبی ذرائع سے وافر بجلی پیدا کی جاسکتی ہے، حکومت گلگت بلتستان میں ریجنل گرڈ بناکر اسے پاور سائٹس سے منسلک کردے تو بڑے اچھے نتائج برآمد ہونگے۔ ملک طاہر جاوید نے کہا کہ گلگت بلتستان کے ہائیڈرو انرجی، ڈرائی فروٹ، قیمتی اور نیم قیمتی پتھروں کے خزانے موجود ہیں جن سے اگر پوری طرح استفادہ کیا جائے تو اس خطے کی تقدیر بدل سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں سرمایہ کاری سے صرف اس علاقے ہی نہیں بلکہ قومی معیشت کا بھرپور فائدہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں قیمتی و نیم قیمتی پتھروں کے وسیع ذخائر ہیں جن کا بیشتر حصہ ٹیکنالوجی کے فقدان کی وجہ سے خام حالت میں ہی برآمد کردیا جاتا ہے، حکومت کو اس جانب توجہ دینی چاہیے۔ لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر خواجہ خاور رشید اور نائب صدر ذیشان خلیل نے وزیراعلیٰ گلگت بلتستان کو آگاہ کیا کہ لاہور چیمبر بھی ایئرلائن کے قیام کے لیے کام کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ قیمتی و نیم قیمتی پتھروں کے شعبے میں ویلیوایڈیشن سے بھاری قیمتی زرمبادلہ کمایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے وزیراعلیٰ کو آگاہ کیا کہ کہ لاہور چیمبر مختلف ایونٹس کے انعقاد کے ذریعے گلگت بلتستان کی پوٹینشل کو اْجاگر کرنے کے لیے سرگرم عمل ہے۔انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں ہائیڈل ذرائع سے بجلی پیدا کرکے توانائی کے بحران سے ہمیشہ کے لیے چھٹکارا پایا جاسکتا ہے۔

مزید : کامرس