جنوبی اضلاع میں گیس کی پیداوار میں کمی کے باعث شارٹ فال کا سامنا ہے،ایس این جی پی ایل

جنوبی اضلاع میں گیس کی پیداوار میں کمی کے باعث شارٹ فال کا سامنا ہے،ایس این ...

لاہور(پ ر)سوئی ناردرن گیس پائپ لائنز لمیٹڈ حکام نے پشاور سمیت خیبر پختونخوا کے مختلف علاقوں میں سوئی گیس کی کمی کی شکایت کے بارے میں وضاحت کرتے ہوئے بتایا ہے کہ جنوبی اضلاع میں گیس کی پیداوار میں 150ایم ایم سی فٹ کمی کے باعث شارٹ فال کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔تکنیکی اور آپریشنل خرابی کی وجہ سے گیس کم فراہم کی جا رہی ہے۔یہ تاثر غلط ہے کہ سوئی گیس کی لوڈ شیڈنگ ہو رہی ہے۔اس سلسلے میں ایس این جی پی ایل کے ترجمان کی جانب سے وضاحت کی گئی ہے کہ صوبے کے جنوبی اضلاع کرک،کوہاٹ،لکی مروت میں گیس کے قدرتی ذخائر سے گیس کی کم پیداوار اور کھپت زیادہ ہونے سے صارفین کو گیس کی کمی جیسی مشکلات سے دو چار ہونا پڑ رہا ہے۔یہ بھی تاثر غلط اور بے بنیاد ہے کہ سی این جی سٹیشنز کو الگ لائن سے پوری گیس فراہم کی جا رہی ہے ۔

حالانکہ سی این جی سٹیشنز کے لئے کوئی مخصوص لائن نہیں ہے اور سب صارفین کو ایک ہی لائن سے گیس فراہم کی جا رہی ہے۔

آئین کے آرٹیکل 158کے تحت کمپنی تمام شعبوں کو گیس فراہم کرنے کی پابند ہے اور اگرسی این جی سٹیشنز کو گیس کی فراہمی بند کردی جائے تو لاکھوں گاڑیاں رک جائیں گی اور پٹرولیم کی کھپت بھی بڑھنے کے ساتھ ساتھ لاکھوں لوگوں کا روزگار بھی متاثر ہوگا۔مزید برآں ایس این ھی پی ایل صوبے میں گیس نظام کی بہتری کے لئے موجود جنرل منیجر پشاور ریجن ثاقب ارباب کی سربراہی میں گزشتہ چار سال سے مؤثر اقدامات اٹھا رہی ہے۔آئندہ سال جنوری کے آخر تک پشاور میں 38کلو میٹر کی نئی ٹرانسمشن لائن بچھا دی جائے گی جبکہ شہر میں پرانی پائپ لائنوں کی اپ گریڈیشن کا سلسلہ بھی ریپڈ بس ٹرانزٹ منصوبے کے ساتھ ساتھ شروع کیا گیا ہے جو تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔2.2بلین روپے کی لاگت سے مردان سے سوات تک 101کلومیٹر کی الگ ایک پائپ لائن بچھائی جا رہی ہے۔یہ منصوبہ جون 2018تک مکمل ہو جائے گا۔گزشتہ چار سالوں کے دوران گیس کے لاسسز میں 7فیصد کمی ہوئی ہے اور اس مد میں سینکڑوں افراد کے خلاف مقدمات درج کئے گئے ہیں۔ترجمان نے مزید بتایا کہ بعض لوگ گھریلو کنکشن پر تندور بھی گرم کرتے ہیں اور اکثر گھروں میں گیس جنریٹر ز چل رہے ہیں جن کے لئے گھریلو کنکشن کے پائپ مناسب نہیں اور اس سے بھی صارفین کو گیس کی کمی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ایس این جی پی ایل صوبے میں گیس کی طلب اور کھپت کو سامنے رکھ کر گیس کی فراہمی کا سلسلہ جاری رکھے ہوئے ہے اور اس وقت پنجاب سمیت ملک کے دیگر علاقوں سے گیس حاصل کر کے صارفین کو فراہم کی جا رہی ہے۔

مزید : کامرس