مادری زبان کو ذریعہ تعلیم بنانیوالی قوموں نے غیر معمولی کامیابیاں حاصل کی: رضا علی گیلانی

مادری زبان کو ذریعہ تعلیم بنانیوالی قوموں نے غیر معمولی کامیابیاں حاصل کی: ...

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن سید رضا علی گیلانی نے کہا ہے کہ مادری زبان کو ذریعہ تعلیم بنانے والی قوموں نے شعبہ تعلیم میں غیر معمولی کامیابیاں حاصل کی ہیں۔ پنجابی نہایت پر تاثیر اور ادبی حوالے سے مستحکم زبان ہے۔ ہمیں اپنی زبان پر فخر ہے جس کی آبیاری کیلئے ہر فورم پر کردار ادا کریں گے۔ ان خیالات کا اظہارصوبائی وزیر برائے ہائر ایجوکیشن سید رضا علی گیلانی نے لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی میں انٹرنیشنل پنجابی کانفرنس کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں کیا۔ اس موقع پر چیئرمین متروکہ وقف املاک بورڈ صدیق الفاروق،وائس چانسلرلاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی ڈاکٹر عظمیٰ قریشی ،بھارت سے ڈاکٹر دھونت کور اورکینیڈا سمیت دنیا بھر سے آئے پنجابی زبان کے اساتذہ و ماہرین بھی موجود تھے۔ صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن سید رضا علی گیلانی نے کہا کہ پنجابی کو صوبے کے تمام کالجوں میں بطور اختیاری مضمون پڑھائے جانے کی تجویز پر غور کریں گے۔ وائس چانسلرلاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی ڈاکٹر عظمیٰ قریشی نے کہا ہے کہ انٹرنیشنل کانفرنسز تعلیمی و تحقیقی شعبے کو جلا بخشتی ہیں۔ غیر ملکی سکالرز سے مل کر متعلقہ مضامین کے جدید رجحانات سے آگاہی حاصل ہوتی ہے۔ تین روزہ کانفرنس میں پنجاب کی ثقافت کو اجاگر کرنے کیلئے مختلف پروگرامز پیش کئے جائیں گئے جن میں لوک گیت، قوالی،پتلی تماشہ اور مشاعرہ شامل ہیں۔ صوبائی وزیر نے بعد ازاں گورنمنٹ کالج برائے خواتین بلال گنج کے دوسرے کانووکیشن میں کامیاب طالبات میں اسناد تقسیم کیں۔ اس موقع پرڈائریکٹر کالجز لاہور، پرنسل کالج اور اساتذہ و طالبات کی بڑی تعداد موجود تھی۔ صوبائی وزیر نے ہم نصابی سرگرمیوں میں نمایاں کامیابیاں حاصل کرنے والی طالبات میں سرٹیفکیٹ تقسیم کیے۔

اور اپنے خطا ب میں کہا کہ خواتین کی تعلیم معاشرے کی درست سمت کا تعین کرنے کیلئے نہایت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نصابی سرگرمیوں میں حصہ لینے والے طلباء کی فکری صلاحیتوں میں نکھارآتا ہے۔ سید رضا علی گیلانی نے کہا کہ بچیوں کی تعلیم کو یقینی بنانے سے ہم اگلی نسل کی بہترین تربیت کو یقینی بنا رہے ہیں۔ صوبائی وزیر ہائر ایجوکیشن نے اس کے بعد گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور میں پنجاب ہائر ایجوکیشن کمیشن اور پاپولیشن ایسوسی ایشن آف پاکستان کے اشتراک سے منعقد دو روزہ کانفرنس کے اختتامی سیشن کی صدارت کی۔ آبادی میں اضافے اور انسانی ترقی کے موضوع پرمنعقدہ کانفرنس سے خطاب میں صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ کسی بھی مسئلے کو حل کرنے کیلئے پہلے اس کا ادراک ضروری ہے۔ ہمیں یہ سمجھنا ہو گا کہ بڑھتی ہوئی آبادی ایک مسئلہ ہے جس کو حل کرنے کیلئے حکومت کیساتھ ساتھ سول سوسائٹی کو بھی اپنا کردار ادا کرنا ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ ہر فرد کی معاشرے میں ذمہ داری ہے کہ خاندان کی سطح پر بھی آگاہی پھیلائے۔انہوں نے کہا کہ حالیہ مردم شماری کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ پنجاب کی آبادی کم ہوئی ہے جس کی وجہ سے قومی اسمبلی میں پنجاب کی سیٹیں بھی کم ہوئیں۔ یہ اس بات کی دلیل ہے کہ معاشرے میں کچھ آگاہی پھیل رہی ہے جو خوش آئند ہے۔انہوں نے کہا کہ کانفرنس میں پیش کی جانے والی سفارشات کی روشنی میں پالیسی مرتب کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ آبادی میں بے ربط اضافہ غربت، جہالت اور جرائم میں اضافے کا سبب بھی ہے جنہیں کنٹرول کرنے کی ضرورت ہے۔ کانفرنس سے چیرمین پنجاب ہائر ایجوکیشن کمیشن ڈاکٹر نظام الدین اور وائس چانسلرجی سی یو ڈاکٹر حسن امیر شاہ نے بھی خطاب کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4