بد اخلاقی کے شکار ملزم کی سگے بیٹے سے بداخلاقی کا انکشاف

بد اخلاقی کے شکار ملزم کی سگے بیٹے سے بداخلاقی کا انکشاف

لاہور(خبرنگار)شیرا کوٹ کے علاقے میں چند روز قبل چار بچوں کی بازیابی کے بعد گرفتار ہونیوالے ملزم کے انکشافات، ملزم اکبر نے حقیقی بیٹے کو بھی دو بار بد اخلاقی کا نشانہ بنایا، پولیس نے گزشتہ روز ملزم، اسکے بیٹے اور سابق اہلیہ کے بیانات قلمبند کرلئے۔ ملزم نے پولیس کو بیان دیا کہ جب وہ دس سال کا تھا تو محلے دار عاشق نامی شخص اسے ورغلا کر اپنے گھر لے گیا، جہاں اس نے چاقو کی نوک پر دھمکیاں دیں اور بد اخلاقی کا نشانہ بنایا، گھر واپس آکر والد کو بتایا تو انہوں نے اس بات کو ماننے سے انکار کردیا اور ڈانٹ ڈپٹ کرتے ہوئے گھر سے نکال دیا ،اس کے بعد بھی عاشق زبردستی بد اخلاقی کا نشانہ بناتا رہا۔ایک مرتبہ موقع پاکر عاشق کو چھری مار کر شدید زخمی کردیا اور وہاں سے فرار ہوگیا، لیکن عاشق کی جانب سے بد اخلاقی کا اثر اس کے دل و دماغ سے نہیں گیا۔ملزم داتا دربار کی حدود میں رات کو جاتا اور گھروں سے بھاگ کر آئے ہوئے معصوم بچوں کو ورغلا کر گھر لے جاتا ،جہاں ان کو انتقام کے طور پربد اخلاقی کا نشانہ بناتا، نہ ماننے پر بچوں کو دھمکیاں بھی دیتا تھا۔ ملزم کی سابق بیوی ثریا نے پولیس کو بتایا کہ اکبر درندہ صفت انسان ہے ، اس نے اپنے اڑھائی سالہ بیٹے کو بھی بد اخلاقی کا نشانہ بنایا تھا ،جب وہ 13 سال کا ہوگیا تو اکبر نے پھر اپنے بیٹے کو بد اخلاقی کا نشانہ بنایا، جس کے بعد پولیس نے ملزم اکبر کے خلاف مقدمہ درج کرکے اسے جیل بھی بھجوا دیا، جیل سے واپس آنے پر دونوں میں علیحدگی ہوگئی۔ واضح رہے کہ داتا دربار انویسٹی گیشن پولیس نے چند روز قبل شیرا کوٹ کے علاقے میں واقع ایک کمرہ کے مکان میں چھاپہ مار کر وہاں سے ملزم اکبر کو گرفتار کرکے شان،علی شان وغیرہ چار بچوں کو بازیاب کروایا بعد میں ملزم کے گھر سے موبائل فونز اور ممنوعہ اشیا برآمد کی گئیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ انویسٹی گیشن پولیس کی تفتیش کے بعد ملزم اکبر کو سی آئی اے پولیس کے حوالے کیا جائے گا، جس سے پولی گرافی سے تفتیش کا آغاز کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی