ہائیکورٹ بارکی شہباز‘ رانا ثناء کو استعفیٰ کیلئے 7روز کی ڈیڈ لائن

ہائیکورٹ بارکی شہباز‘ رانا ثناء کو استعفیٰ کیلئے 7روز کی ڈیڈ لائن

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ بار ایسو سی ایشن نے اعلان کیا ہے کہ عدلیہ مخالف تقاریر پر میاں محمدنواز شریف اور ان کے اہل خانہ کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جائے گی ۔ہائی کورٹ بار نے سانحہ ماڈل ٹاؤن جوڈیشل انکوائری رپورٹ کی بنیاد پروزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف اور صوبائی وزیرقانون رانا ثناء اللہ سے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے 7روز کی ڈیڈ لائن دے دی ہے ۔لاہور ہائیکورٹ بار ایسو سی ایشن کے صدر چودھری ذوالفقار علی اور دیگر عہدیداروں نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میاں محمدنوازشریف ان کے خاندان کے افراد ایک گینگ بن چکے ہیں جو عدلیہ پر حملہ آور ہونا چاہتا ہے ،نواز شریف عدلیہ کے خلاف نکلیں وکلاء نواز شریف کے خلاف اور سپریم کورٹ کے حق میں نکلیں گے۔انہوں نے کہا کہ سابق وزیراعظم میاں محمدنواز شریف ،ان کی صاحبزادی مریم نواز اوربعض وزراء عدلیہ کے خلاف بیان بازی سے باز نہیں آرہے ،ہائی کورٹ بارکی طرف سے میاں محمد نواز شریف اور ان کے اہل خانہ کو لیگل نوٹس بھجوا یا جارہا ہے ۔میاں نواز شریف اور مریم نواز عوام کو عدلیہ کے خلاف اکسانے پر معافی مانگیں ،ورنہ قانونی چارہ جوئی کے لئے تیار رہیں ۔بار کے عہدیداروں نے نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی جوڈیشل انکوائری رپورٹ کی بنیاد پر وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف اور وزیر قانون رانا ثنا ء اللہ سے استعفیٰ کا مطالبہ کرتے ہوئے خبر دار کیا کہ ہم انہیں استعفیٰ کے لئے سات دن کی مہلت دے رہے ہیں جس کے بعد راست اقدام کے لئے لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔انہوں نے ملتان کی عدالتوں کی پرانی عمارت میں منتقلی کے چیف جسٹس پاکستان کے حکم کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ چیف جسٹس کے دانشمندانہ اور انصاف پر مبنی اقدام کے باعث ملتان جوڈیشل کمپلیکس کا تنازع حل ہوا ہے ۔

ڈیڈ لائن

مزید : علاقائی