کوئی افلاطون میرا منہ لاک لگا کر بند کر نا چاہتا ہے : مصطفی کمال

کوئی افلاطون میرا منہ لاک لگا کر بند کر نا چاہتا ہے : مصطفی کمال
 کوئی افلاطون میرا منہ لاک لگا کر بند کر نا چاہتا ہے : مصطفی کمال

  

کراچی(آن لائن )چیئرمین پاک سرزمین پارٹی مصطفی کمال نے کہا ہے کہ کوئی افلاطون میرا منہ لاک لگاکر بند کرنا چاہتا ہے ۔،کچھ لوگ محب وطن پاکستانیوں سے لوگوں کو بد ظن کرنا چاہتے ہیں،میں نے راتیں جاگ کر کراچی بنایا ، ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں نیب کے دفتر کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔نیب نے مصطفی کمال سے پتھاروں کی غیر قانونی فروخت کے کیس سے متعلق دستاویزات طلب کی تھیں جسے جمع کرانے کے لیے مصطفیٰ کمال نیب کے دفتر پہنچے جہاں پہلے تو انہیں اندر آنے کی اجازت نہ ملی۔مصطفیٰ کمال، وسیم آفتاب اور ڈاکٹر صغیر کچھ دیر نیب کے دفتر کے باہر کھڑے رہے تاہم تھوڑی دیر میں انہیں اندر آنے کی اجازت مل گئی۔بعد ازاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مصطفی کمال نے کہا کہ مجھے دوسری بار نیب آفس طلب گیا ہے ،کل مجھے نیب سے خط موصول ہوا،میری نظامت کے زمانے کا ایک مسئلہ ہے جو کچھ نہیں ،مسئلہ مائند سیٹ کا ہے ،کچھ لوگ محب وطن پاکستانیوں سے لوگوں کو بد ظن کرنا چاہتے ہیں میں نے 3 سو ارب روپے اپنے ہاتھوں سے خرچ کیے ،مجھ پر کسی قسم کی کرپشن کا الزام نہیں لگا ،میری کوئی پراپرٹی باہر ملک میں موجود نہیں ہے،انہوں نے کہا کہ 2016 میں واپس آنے کے بعد مجھ پر کیس بنایا گیا ،اگر میں پاکستان نہ آتا تو مجھ پر کیس بنایا جاتا؟،آخر کوئی آئین سٹائیں میری پارٹی مقبول نہ ہوتی تو یہ خط مجھے موصول نہ ہوتا ،مصطفیٰ کمال نے کہا کہ مجھ پر الزام لگے گا میں نیب آؤں گا ،جب پاکستان روانہ ہورہا تھا تو میرے بچے رو رہے تھے ،مگر ملک کو را کے ایجنٹ نقصان پہنچا رہے تھے ،میں اپنے بچوں کو سمجھا کر آیا کہ میں جہاد کرنے جارہا ہوں ،میرے جاننے والے اس نیب کی طلبی کو دیکھ کر اچھا سمجھیں گے ؟میرے اپنے لوگ مجھے روکا کرتے تھے ، مگر میں پاکستان کے لئے آیا،میرا یہ قصور ہے کے میں نے را کے ایجنٹ الطاف کو دفن کیا ؟،ایم کیو ایم یعنی ممی قومی موومنٹ کی نفرت کی سیاست کو ختم کرنا میرا گناہ ہے؟ ،انہوں نے کہا کہ ملک لوٹنے والوں کو کوئی پوچھنے والا نہیں ،مجھے نیب سے شکوہ نہیں ، لیکن کوئی تو آخر یہ کرارہا ہے ،میں نے آج تک کوئی کام جبری طور پر نہیں کیا ،ہم 2 لوگ آئے تھے آج قافلہ بن گیا ہے ،کراچی والو میں تمہیں آواز لگا رہا ہوں ،24 دسمبر کو باہر آؤ اور اس مائنڈ سیٹ کو تبدیل کرو۔

مزید : صفحہ اول