نیشنل کمانڈ اتھارٹی کا اجلاس،پاکستان کا کم سے کم ایٹمی صلاحیت برقرار رکھنے کا فیصلہ

نیشنل کمانڈ اتھارٹی کا اجلاس،پاکستان کا کم سے کم ایٹمی صلاحیت برقرار رکھنے ...

راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیٰسک ،صباح نیوز) نیشنل کمانڈ ینڈ کنٹرول اتھارٹی نے کسی بھی بیرونی جارحیت کے خلاف پاکستان کی صلاحیت پر مکمل اعتماد کا اظہار کر تے ہوئے واضح کیا ہے کہ پاکستان اسلحے کی دوڑ میں شریک نہیں ہو گا تاہم کم سے کم ایٹمی صلاحیت برقرار رکھی جائے گی جبکہ میزائل تجربات کا مقصد قومی دفاع کو مضبوط بنانا ہے، ترجمان پاک فوج کے مطابق جمعرات کے روز وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کی صدارت میں نیشنل کمانڈ اتھارٹی کا اجلاس ہوا اجلاس میں وفاقی وزراء احسن اقبال ، خرم دستگیر چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی اور تینوں مسلح افواج کے سربراہان نے شرکت کی نیشنل کمانڈ اتھارٹی کو سٹریٹجک صورتحال پر بریفنگ دی گئی اجلاس میں شرکاء نے پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنے والے ہمسایہ ملک کی کاروائیوں پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس عزم کا اظہار کیا کہ پاکستان کسی بھی جارحیت کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہے ہمسایہ ملک کی سرگرمیوں سے جنوبی ایشیاء میں سٹریٹجک عدم استحکام پید اہو رہا ہے نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے کہا کہ ہتھیاروں کی دوڑ میں شریک نہیں تاہم پاکستان کم سے کم دفاعی صلاحیت برقرار رکھے گا اس دوران نیشنل کمانڈ ینڈ کنٹرول اتھارٹی نے کسی بھی بیرونی جارحیت کے خلاف پاکستان کی صلاحیت پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا جبکہ قومی دفاع کو مضبوط بنانے پر سائنسدانوں اور انجنیئرز کو مبارکباد پیش کی گئی این سی اے نے نئے میزائل بابر تین اور میزائل سسٹم ابابیل کے کامیاب تجربے پر بھی مبارکباد دی این سی اے نے ایٹمی اثاثوں کے کمانڈ اینڈ کنٹرول نظام پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ایٹمی عدم پھیلاؤ اور اثاثوں کی سیکورٹی کی پالیسی پر عمل پیرا ہے بڑے پیمانے پر اسلحہ بنانا بحر ہند خطے کو جوہری بنانا عدم استحکام کا باعث ہے بیلسٹک میزائل کی تیاری اور تنصیب کے منصوبے بھی عدم استحکام کا باعث ہیں نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے کسی بھی جارحیت سے نمٹنے کی پاکستان کی صلاحیت پر اظہار اعتماد کیااجلاس نے جوہری سیکورٹی نظام کے مکمل محفوظ ہونے پر اظہار اطمینان کیا اجلاس میں کہا گیا کہ جوہری تنصیبات کے تحفظ کے لیے جامع اور فول پروف سیکورٹی نظام موجود ہے جوہری عدم پھیلاؤ کے عالمی قوانین کی پاسداری کرتے رہیں گے اور جوہری عدم پھیلاؤ کے عالمی قوانین موثر بنانے میں کردار ادا کرتے رہیں گے اجلاس میں مزید کہا گیا کہ ہر قسم کے خطرات سے نمٹنے کے لیے سٹریٹجک فورسز تیار ہیں خطے میں پرامن بقائے باہمی پاکستان کی خواہش ہے جنوبی ایشیاء میں سٹریٹجک استحکام کے لیے ہمسایوں کے ساتھ کام کرنے کو تیار ہیں۔ نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے قومی جامع برآمدی کنٹرول اقدامات پر اطمینان ظاہر کیا ہے جو کہ عالمی ایکسپورٹ کنٹرول کے مطابق ہے نیشنل کمانڈ اتھارٹی نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان (نیوکلیرء سپلائر گروپ ) سمیت مختلف ایٹمی عدم پھیلاؤ کے اداروں کا ممبر بننے کے لیے مطلوبہ شرائط پوری کرتا ہے پاکستان چاہتا ہے اس کے ساتھ غیرجانبدارانہ برتا روا رکھا جائے ۔نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول اتھارٹی کو ملک میں بڑھتی ہوئی توانائی کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے نیشنل سپیس پروگرام 2047اور نیوکلیئر پاور پروگرام پر بھی بریفنگ دی گئی جسکی شرکاء نے بھرپور تائید کی اور قراردیا کہ یہ ملک کی تعمیر و ترقی کے لیے ایسے منصوبے ناگزیرہیں نیشنل کمانڈ اینڈ کنٹرول اتھارٹی کے اجلاس میں خصوصی طور پر سپیس پروگرام کی سویلین سیکٹرز میں فروغ پر بھی غور کیا گیا جبکہ نیوکلیئر اپلیکیشن کی فیلڈ جس میں ہیلتھ، زراعت، انڈسٹری اور ادویات کے شعبہ جات میں اسکی کامیابی کی بھرپور تعریف کی گئی ۔

اجلاس

مزید : کراچی صفحہ اول