امریکی فیصلے کے خلاف بلدیہ عظمی میں رہنما جماعت اسلامی کی قرارداد منظور

امریکی فیصلے کے خلاف بلدیہ عظمی میں رہنما جماعت اسلامی کی قرارداد منظور

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) بلدیہ عظمیٰ کراچی نے امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیل کا دار الحکومت تسلیم کر نے کے فیصلے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے اور حکومت پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ با ضابطہ طور پر امریکہ کے اس فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے اس فیصلے کے خلاف پاکستانی قوم اور پوری امتِ مسلمہ کے احساسات و جذبات کی ترجمانی کرے ۔بلدیہ عظمیٰ نے یہ مطالبہ جمعرات کے روز سٹی کونسل کے اجلاس میں متفقہ طور پر منظور کی جانے والی قرار دادمیں کیا ۔قرارداد جماعت اسلامی کے پارلیمانی لیڈر جنید مکاتی نے پیش کی جبکہ تجویز کندہ حنیف میمن اور ولید احمد تھے ۔قرار داد میں کہا گیا ہے کہ کراچی کے نمائندوں کا یہ ایوان امریکی صدر کے متعصبانہ یہودی نواز اور مسلم دشمنی کے رویے کی بھی شدید مذمت کر تا ہے اور اس امر کا اظہار کر تا ہے کہ انبیاءؐ کی سر زمین بیت المقدس کو اسرائیل کا دار الحکومت کسی صورت میں بھی تسلیم نہیں کیا جائے گا ۔مسلم امت اپنے اتحاد و یکجہتی سے ہی حالات کا مقابلہ کر سکتی ہے ۔اتحادو یکجہتی وقت کی اہم ترین ضرورت ہے ۔دریں اثناء جماعت اسلامی کراچی کے بلدیاتی امور کے نگراں اور پبلک ایڈ کمیٹی کے صدر سیف الدین ایڈوکیٹ اور جنرل سیکریٹری نجیب ایوبی نے بلدیہ عظمیٰ کراچی کی جانب سے امریکہ اور اسرائیل کی مذمت و مخالفت اور قبلہ اوّل بیت المقدس اور فلسطین کے مسلمانوں کی حمایت کے لیے قرار داد کی منظوری پر سٹی کونسل کے تمام اراکین اور قرار داد کے محرک جنید مکاتی کو خراجِ تحسین پیش کر تے ہوئے مبارکباد دی ہے اور کہا ہے کہ سٹی کونسل نے پوری امت مسلمہ کی ترجمانی کی ہے اور اتحاد امت کا بھر پور اظہار کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ قبلہ اوّل ہر کلمہ گُو شخص کے لیے انتہائی محترم اور مکرم ہے ۔مسلمان مکہ معظمہ اور مدینہ منورہ کے بعد بیت المقدس کو سب سے قابلِ احترام جگہ تصور کر تے ہیں ۔اسرائیل نے بیت المقدس پر ناجائز قبضہ کیا ہے ۔امریکہ اور اسرائیل کے بیانات اور اقدامات کی کوئی قانونی حیثیت نہیں ہے ۔امریکہ کے اِس فیصلے کی واپسی اور القدس کی آزادی تک جدو جہد جاری رہے گی ۔

مزید : کراچی صفحہ اول