سرکاری تعلیمی اداروں کے ملازمین کو کسی صورت پرائیویٹ تعلیمی ادارے چلانے کی اجازت نہیں:طلعت فہد

سرکاری تعلیمی اداروں کے ملازمین کو کسی صورت پرائیویٹ تعلیمی ادارے چلانے کی ...

چارسدہ (بیور و رپورٹ) اسسٹنٹ کمشنر طلعت فہد نے کہا ہے کہ چارسدہ میں سرکاری تعلیمی اداروں میں کام کرنے والے ملازمین کو ڈیوٹی کے اوقات کار میں کسی صورت پرائیوٹ تعلیمی ادارے چلانے کی اجازت نہیں دی جائے گی ۔ایسے پرائیوٹ تعلیمی اداروں کے سربراہان کے خلاف قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے گی۔ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے چارسدہ میں چارسدہ انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی کے طلباء کی جانب سے طلبہ و طالبات کو مائیگریشن سرٹیفیکیٹ جاری نہ کرنے کے تنازعہ کے حل کے بعد میڈیا سے بات چیت کے دوران کیا ،اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ چارسدہ میں ایک پرائیوٹ تعلیمی ادارے کے سربراہ نے جو کہ سرکاری کالج میں پروفیسر ہے نے اپنا تعلیمی ادارہ قائم کیاتھا جو اس نے گزشتہ روز ایک دوسرے شخص پر فروخت کر دیااور جب کالج میں پڑھنے والے طلبہ و طالبات نے کالج سے مائیگریشن کرنا چاہی تو کالج کی نئی انتظامیہ نے طلبہ کو مائیگریشن سرٹیفکیٹ فراہم کرنے سے انکار کر دیا جس کے بعد ضلعی انتظامیہ نے کالج انتظامیہ اور طلبہ کے درمیان تمام تحفظات دور کردی جس کے بعد طلبہ آج سے کالج میں تعلیمی سرگرمیاں شروع کرینگے ۔اس موقع پر اسسٹنٹ کمشنر کا مزید کہنا تھا کہ چارسدہ میں سرکاری تعلیمی اداروں کے تمام ملازمین کو کسی صورت یہ اجازت نہیں دی جائے گی کہ وہ ڈیوٹی کے اوقات کار میں پرائیوٹ تعلیمی ادارے چلائے اور ضلعی انتظامیہ ایسے تمام سرکاری ملازمین کے خلاف قانونی کاروائی کرے گی جو سرکاری ڈیوٹی کے اوقات میں پرائیوٹ تعلیمی اداروں میں کام کررہے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر