ضلعی انتظامیہ ماربل صنعت اور ٹرک مالکان کے کاروبار کو تباہ کرنے کے درپے ہیں

ضلعی انتظامیہ ماربل صنعت اور ٹرک مالکان کے کاروبار کو تباہ کرنے کے درپے ہیں

بونیر (ڈسٹرکٹ رپورٹر)ضلعی انتظامیہ کی جانب سے روزانہ ماربل ٹرکوں کو اپنے کمیشن کے لئے اور لوڈنگ کے نام پر بھاری جرمانے عائید کرنے کے خلاف ماربل ایسوسی ایشن ۔ٹرکس او نرز ایسوسی ایشن سراپا احتجاج ۔ضلعی انتظامیہ ماربل صنعت اور ٹرک مالکان کے کاروبار کو تباہ کرنے کے درپے ہیں ۔ضلعی انتظامیہ کی ظالمانہ اقدامات کے خلاف ماربل ۔مائننگ اور ٹرکس مالکان کا 26 دسمبر بروز منگل سے نامعلوم مدت تک بونیر بند کرنے کااعلان کردیا ۔26 دسمبر سے بونیر ضلع میں ٹرانسپور ٹ کا پہیہ جام ہوگا ۔اس بات کا فیصلہ جمعرات کے روز ٹرکس اونرز ایسوسی ایشن کے صدر عبدالستار بونیر وال ۔جنرل سیکرٹری شاہ فرین خان ۔سید احمد عرف چنگئی حاجی ۔نصیب گل ۔ماربل ایسوسی ایشن کے صدر مراد خان ۔ریاض خان نے تور ورسک میں اہم اجلاس کے بعد مقامی صحافیوں کو تفصیلات بتاتے ہوئے کیا ۔انہوں نے کہا کہ ضلعی انتظامیہ بونیر میں ماربل کی واحد صنعت کو تباہ کرنے کے ساتھ ساتھ ٹرکس مالکان کو بھی بے جاتنگ کررہے ہیں ۔اور لوڈنگ کے نام پر ہزاروں روپے پرچے دینے اور ڈرائیوروں کو حوالات میں بند کرنے کے درپے ہیں ۔ان رہنماؤں نے کہا کہ ہم نے اس سلسلے میں ڈی سی بونیر اور ڈی پی او بونیر کے ساتھ کئی ملاقاتیں کی ہے ۔مگر نتیجہ صفر کے برابر ہیں ۔ماربل بونیر کی واحد صنعت ہے جس سے ہزاروں کی تعداد میں عوام کا روزگار وابستہ ہے ۔بونیر میں پانچ سو ماربل کارخانوں میں ہزاروں کی تعداد میں مزدور کام کررہے ہیں۔ضلعی انتظامیہ نے دفعہ 144 نافذ کرکے ان ہزاروں مزدورں کی گھروں کی چولہوں کو بند کردیاہے ۔ہم صوبائی اور مرکزی حکومت کو ماہانہ لاکھوں روپے کا ٹیکس دیتے ہیں ۔مگر ہمارے ساتھ تعاون اور اس صنعت کو پروان چڑھانے کی بجائے اس صنعت کو تباہ کیا جارہاہے ۔انہوں نے کہا کہ منگل کے روز تک اگر بونیر میں دفعہ 144 کے نفاذ کا خاتمہ اور پولیس کی جانب سے بے جا پرچوں کا خاتمہ نہ کیا گیا تو پہیہ جام ہڑتال کے ساتھ ساتھ سواڑی میں نامعلوم وقت تک دھرنا دیا جائے گا ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر