پاکستان کامستقل یا نگراں وزیرخزانہ کا تقرر کیا جائے،ایس ایم منیر

پاکستان کامستقل یا نگراں وزیرخزانہ کا تقرر کیا جائے،ایس ایم منیر

کراچی (اکنامک رپورٹر ) یونائٹیڈ بزنس گروپ (یوبی جی)کے سرپرست اعلیٰ ایس ایم منیر نے کہا کہ موجودہ صورتحال میں پاکستان کا مستقل یا نگراں وزیرخزانہ کا تقرر کیا جائے تاکہ وہ بز نس کمیونٹی کے مسائل کو سمجھ سکیں، 300ارب روپے کے سیلزٹیکس ریفنڈز زیرالتوا ہیں جو اگر جاری کردیئے جائیں تو ملکی برآمدات بڑھ سکتی ہیں،ہم حکومت کی جانب سے ملکی معیشت کے سدھار کیلئے کئے جانے والے ہر مثبت کام میں ساتھ دیں گے لیکن اگر بزنس کمیونٹی کے بہتر مفاد کی ایف پی سی سی آئی تجاویز کوحکومت نے نظر انداز کیا توجنوری2018کے اختتام یا فروری کے آغاز میں لاہور میں ملک گیر بزنس کنونشن ہو گا جس میں حتمی لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار جمعرات کو مقامی ریسٹورنٹ میں میڈیا کے اعزاز میں دیئے گئے ظہرانے میں گفتگو کے دوران کیا۔اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کے صدر زبیرطفیل،یو بی جی کے ترجمان گلزار فیروز،ڈاکٹر مرزااختیار بیگ،یو بی جی الیکشن سیل کے سربر اہ حنیف گوہر،عبدالسمیع خان،شکیل احمدڈھینگڑا،نوراحمدخان،فیڈریشن الیکشن میں سینئرنائب صدرکے امیدوار مظہراے ناصر ، نائب صدور کے امیدوار وحیداحمد،طارق حلیم،شبنم ظفربھی موجودتھے۔ ایس ایم منیر نے کہا کہ ایف پی سی سی آئی کے انتخابات میں ہماری تیاریاں مکمل ہوچکی ہیں،اپٹما کے خلاف مخالفین نے جو کیس کیا تھا اس کا فیصلہ ہمارے حق میں آگیا ہے جبکہ نان میٹرک مخالف صدارتی امیدوارغلام علی نے ہمارے امیدوار غضنفر بلورکے خلاف یہ کیس کیا ہے کہ وہ ایک سینما کے ڈائریکٹر کی حیثیت سے فیڈریشن کی ایگزیکٹوکمیٹی میں آئے ہیں حالانکہ غضنفربلور تعلیم یافتہ اور فلورملوں کے مالک ہیں اور ایک مستند صنعتکار ہیں،مخالف صدارتی امیدوار مسلسل ہمارے امیدواروں کے خلاف نازیبا الفاظوں کا استعمال کررہے ہیں لیکن ہم ان کی زبان میں انکی باتوں کا جواب نہیں دیں گے۔ایس ایم منیر نے کہا کہ اس وقت ملک میں اس وقت حالات ایسے ہیں صنعتیں بند ہورہی ہیں،ایکسپورٹ میں 4ارب ڈالر سے زائد کی کمی ہوئی ہے اور بزنس کمیونٹی بہت پریشان ہے،ہم نے ملک کی تمام بڑی سیاسی جماعتوں کے سربراہان سے انکا اکنامک ایجنڈا معلوم کرنے کیلئے فیڈریشن آنے کی دعوت دی ہے اور آئندہ چندروز میں وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی، پاکستان پیپلز پارٹی کے سربراہ آصف علی زرداری اور چیئرمین سینیٹ فیڈریشن آئیں گے۔انہوں نے بتایا کہ فیڈریشن نے دوسری تجارتی انجمنوں کی مشاورت سے موثر تجاویز مرتب کرناشروع کردی ہیں جنہیں جلد ہی وزیراعظم کو پیش کیا جائے گا۔ایس ایم منیر نے مزید کہا کہ فیڈریشن الیکشن میں یو نائٹیڈ بزنس گروپ کے امیدوا مخالف گروپ کے امیدواروں پر بھاری ہیں اور وہ اپنی اپنی ایسوسی ایشنز کے چیئرمین رہے ہیں، اس کے ساتھ ہی ہم نے جنرل سیٹ پر میرپورخاص چیمبر آف کامرس کی نمائندہ شبنم ظفر کو امیدوار نامزد کیا ہے جن کے مقابلے پر موجود امیدوار شائد صرف اپنا ہی ووٹ لے سکے گا۔ایک سوال کے جواب میں ایس ایم منیر نے کہا کہ بزنس کمیونٹی اب کوئی ہڑتال نہیں کرے گی بلکہ اپنے مطالبات کاروباری افراد کے کنونشن کے ذریعہ منوائے گی لیکن اگر ہماری باتیں نہ مانی گئیں تو فیڈریشن چیمبر آف کامرس سخت لائحہ عمل بھی اپناسکتی ہے۔ اس موقع پرفیڈریشن کے صدر زبیرطفیل نے کہا کہ رواں سال کی فیڈریشن کی کارکردگی پاکستان بھر کی بزنس کمیونٹی کے سامنے ہے اور جو چندگنے چنے لوگ صرف سیاسی بنیادوں پر اپنی آنکھیں بند کئے بیٹھے ہیں انکی آنکھیں29دسمبر کو یو بی جی کی بے مثال کامیابی کے بعد کھلی کی کھلی رہ جائیں گی۔یو بی جی کے ترجمان گلزار فیروز نے میڈیا کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یونائٹیڈ بزنس گروپ ملک بھر کی کاروباری برادری کا مضبوط اور مقبول نمائندہ گروپ بن چکا ہے اور ہمارے گروپ میں مزیدچیمبرز اور ایسوسی ایشنز کی شمولیت اس بات کا ثبوت ہے کہ بزنس کمیونٹی کے مسائل کا حل صرف یو بی جی کی قیادت کے پاس ہے اور 29دسمبرکو ہونے والے ایف پی سی سی آئی الیکشن2018کا فاتح ہمارا گروپ ہی ہوگا۔حنیف گوہر نے کہا کہ ہمارے مقابلے میں اپوزیشن کے پاس نہ تو بزنس کمیونٹی کو دینے کیلئے کوئی پروگرام موجود ہے اور نہ انکے پاس امیدوار موجود ہیں ،یو بی جی نے ایف پی سی سی آئی الیکشن میں اپنی اکثریت قبل ازوقت ثابت کردی ہے اور مخالف امیدوار گھر جانے کی بھی تیاریاں کرلیں۔اختیار بیگ نے کہا کہ ایس ایم منیر اور افتخار علی ملک کی سربراہی میں ہم نے ملک وقوم کی خدمت کرنے،نوجوانوں کو آگے لانے اور فیڈریشن سے بدعنوانیوں کے خاتمے کیلئے جو سفر شروع کیا تھااس میں ہمیں کامیابی ہوئی ہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر