کان کنی اور معدنیات کے منصوبوں پر ہنگامی بنیادوں پر کام کرنا نا گزیر ہے :ملک رابت خان

کان کنی اور معدنیات کے منصوبوں پر ہنگامی بنیادوں پر کام کرنا نا گزیر ہے :ملک ...

شبقدر (نمائندہ خصوصی) مہمند ایجنسی میں کان کنی اور معدنیات کی تلاش کے منصوبوں کو ترقی دینے کیلئے اب ہنگامی بنیادوں پر کام ہونا چاہئے، بعض تحصیل دار صاحبان اور بعض اسسٹنٹ پولیٹیکل ایجنٹس صاحبان نے باقاعدہ لیز بنانے کیلئے محتلف ریٹس بنائی ہوئی ہیں،ٖٖفاٹا کے لوگوں کو کام کرنے دیا جائے۔ لوئر مہمند یکہ غنڈ میں اب بھی بہت سے لیز اس لئے رکھیں ہوئے ہیں کیونہ وہ رشوت نہیں دی رہے ہیں، پولیٹیکل ایجنٹ مہمند معدنیات میں کرپشن کرنے والے سرکاری اہلکاروں کے خلا ف سخت کاروائی کریں بصورت دیگر اختجاج پر مجبور ہونگے، ان خیالات کا اظہار ممتاز سماجی کارکن اور ملک رابت خان حلیم زئی نے شبقدر پریس کلب میں پریس کانفرنس کے دوران کہیں، انہوں نے کہا مہمند ایجنسی میں معدنیات کا لیز بنانا انتہائی مشکل بنادیا گیا ہیں، قوم کی متفقہ رائے موجود ہونے کے باوجود ایک آصل اور مستحق بندے کو لیز نہیں ملتا، جس کی وجہ سے مہمند ایجنسی میں معدنیات اور کان کنی کی صنعت چند لوگوں کے ہاتھوں میں ہیں اور انتہائی انتہائی زوال پذیر ہیں اور اس میں خد درجہ کی کرپشن ہورہی ہیں، ایک طرف پولیٹیکل انتظامیہ کی جانب سے مشکلات پیدا کی جاتی ہیں، جبکہ دوسرے جانب محکمہ معدنیات فاٹا کی جانب سے صرف بڑے بڑے لوگوں کو بغیر کسی قومی ایگریمنٹ کے کئی کئی لیز دی گئی ہیں، مہمند ایجنسی کو بعض افسران نے اپنا جاگیر بنا رکھا ہیں، یہاں کے مقامی یا فاٹا سے تعلق رکھنے والے ٹھیکدار لیز کے حصول کیلئے سرگرداں ہیں، بعض نام نہاد رشوت دینے والے ٹھیکداروں نے کئی کئی لیز حاصل کی ہیں، ایک لیز حاصل کرنے کیلئے ایک مستحق بندہ کو کئی کئی سال انتظار کرنا پڑتا ہیں، اگر پولیٹیکل ایجنٹ مہمند ایسے رشوت خور عملہ کا قبلہ درست نہیں کرسکتے تو پھر ان کو یہاں پر ڈیوٹی کرنے اور نام نہاد دکھاوے کی کوئی ضرورت نہیں، مہمند ایجنسی کے معدنی ذخائر کو کھول کر ہم اربوں ڈالر کما سکتے ہیں، مگر بعض افسران نے اسے اپنی جاگیر بنائی ہوئی اور اپنے ذاتی مفادات کیلئے بعض لوگوں کی لیز میں رکاوٹ بنے ہوئے ہیں، انہوں نے کہا کہ مہمند ایجنسی میں جاری اقرباء پروری اور کرپشن کا بازار گرم کرنے والے اگرگورنر بھی ہو تو ہمیں نہیں چاہئے ، اور ایسے تمام پولیٹیکل انتظا می اہلکاروں اور فاٹا سیکرٹریٹ معدنیات کے اہلکاروں کو وارننگ کرتے ہیں کہ وہ معدنیات کی صنعت کو مہمند ایجنسی میں تباہ ہونے سے دور رہے بصورت دیگر ان لوگوں کے خلاف اسلام آباد کی سڑکو ں پر ہونگے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر