مظفرآباد،مالسی ٹھوٹھہ، مجہوئی ناڑ،کلس ودیگر گاؤں ہائی سکول سے محروم

مظفرآباد،مالسی ٹھوٹھہ، مجہوئی ناڑ،کلس ودیگر گاؤں ہائی سکول سے محروم

مظفرآباد (بیورورپورٹ)مالسی ٹھوٹھہ،سیٹلائیٹ ٹاؤن مجہوئی ناڑ،کلس،بانڈیاں،کلاساء،مونڈا بانڈی ودیگر گاؤں ہائی سکول سے محروم ہزاروں آبادی والے علاقہ میں واحد تعلیمی ادارہ گورنمنٹ مڈل سکول مالسی ہے عوام علاقہ نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ گورنمنٹ مڈل سکول مالسی کو اپ گریڈ کرکے ہائی کا درجہ دیا جائے ۔روزنامہ جرات کی ٹیم سے اہل علاقہ نے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ گورنمنٹ مڈل سکول مالسی کی اپ گریڈیشن اس کا حق ہے اس تعلیمی ادارے کے بعد قائم ہونے والے تعلیمی اداروں کو اپ گریڈ کردیا گیا مگر مڈل سکول مالسی ابھی تک اپ گریڈ نہیں ہوا۔اس سکول نے فارغ ہونے والے بچے میٹرک تک کی تعلیم حاصل کرنے کیلئے باہر دور دراز علاقوں میں جاتے ہیں اس ادارے میں اب بھی سینکڑوں بچے زیر تعلیم ہیں سروے ٹیم سے بات چیت کرتے ہوئے صدر معلم گورنمنٹ مڈل سکول مالسی پرویز مغل نے بتایا کہ ادارے کے پاس بلڈنگ موجود ہے جو میٹرک تک کے بچوں کیلئے مناسب ہے ادارے میں زیر تعلیم بچوں کیلئے ہمارے پاس نہ تو کمپیوٹر لیب ہے اورنہ ہی کمپیوٹر ٹیچر،فرنیچر بھی دستیاب ہے ۔گراؤنڈ بھی مناسب ہے اس لیے حکومت وقت مڈل سکول مالسی کو اپ گریڈ کردے صدر معلم نے مزید بتایا کہ ادارہ کی تعداد آغاز پراجیکٹ سے قبل 400سے زائد تھی پراجیکٹ کی تعمیراتی اورانتظامی سرگرمیوں کی بدولت ادارہ کی تعداد اورکارکردگی بڑی حد تک متاثررہی لوگوں کیلئے بڑے مسائل رہے اب جبکہ پراجیکٹ تکیمل کے مراحل میں ہے اس سے پراجیکٹ کی سرگرمیاں بھی محدود ہوگئیں ہیں ۔اب مقامی طورپر بڑی تعداد میں داخلہ جات متوقع ہیں انہوں نے بتایا کہ مہاجرین جموں کشمیر بڑی تعداد میں سیٹلائیٹ ٹاؤن میں منتقل ہوئے ہیں یہ ادارہ سیٹلائیٹ ٹاؤن کے قریب ترین ہے ۔مناسب عمارت ،فرنیچر ،تدریسی عملہ ہے ۔سیٹلائیٹ ٹاؤن میں منتقل ہونے والے طلباء وطالبات نے داخلہ لیا ہے ۔منتقل ہونے والے کنبہ جات میں سے بھی اکثریت بچے تاحال کیمپ میں منتقل نہیں ہو پائے نہ ہی تعلیمی اسی ادارہ میں داخلہ جات لینگے چونکہ ادارہ کی بہتر کارکردگی پر عوام کا بڑی اعتماد ہے ۔مقامی طور پر کوئی سرکاری گرلز یا بوائز سکول نہ ہے ۔جس کی وجہ سے مقامی کمیونٹی کو سخت مشکلات کا سامنا ہے 45سال سے ادارہ مڈل سکول کے طور پر قائم ہے ادارہ کو فوری طور پر حل کرنے کی ضرورت ہے تاکہ مقامی آبادی اورمہاجر کمیونٹی کے مسائل کم ہوں ۔ادارہ میں کمپیوٹر لیب موجود نہیں ہے فوری طور پر کمپیوٹر لیب قائم کی جائے اورکمپیوٹر انسٹرکٹر کی تعیناتی ہونی چاہیے جدید دور کے تقاضوں کے مطابق تدریسی عمل بحال رکھا جاسکے ۔بچوں اوربچیوں کے لیے مانٹسیوری کٹ دی جائے ۔ادارہ میں اس وقت صرف نو مدرسین ہیں بڑھتی ہوئی تعداد میں پیش نظر مزید آسامیاں تخلیق کی جائیں ۔ادارہ میں خاکروب کی آسامی تخلیق کی جائے۔ادارہ میں کھیل کا گراؤنڈ موجود نہیں ہے ۔اس ضمن میں محکمہ انتظامیہ کو تحریک کی جاچکی ہے ۔ادارے کا بڑا رقبہ عقبی جانب موجود ہے اسے کھیل کے گراؤنڈ کے لیے مختص کیا جائے

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر