بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم نہیں کریں گے، عبدالرحمن سلفی

بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم نہیں کریں گے، عبدالرحمن سلفی

کراچی (اسٹاف رپورٹر)امریکہ کی جانب سے بیت المقدس کو اسرائیلی دارالحکومت قرار دینے کے فیصلے پر ہم اپنی جماعت کی جانب سے گہری تشویش کا اظہار کرتے ہیں ۔اس کی سخت مذمت کرتے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار امیر جماعت غرباء اہلحدیث پاکستان مولانا عبدلاحمن سلفی نے کیا۔ انہوں نے کہا کہ بیت المقدس مسلمانوں کا اقبلہ اول ہے جس کی جانب رخ کرکے آقائے دو جہاں حضرت محمدﷺ نے ساڑھے چودہ سال تک نماز ادا کی اور یہیں سے معراج کے لئے تشریف لے گئے ۔ پوری دنیا کے مسلمانوں نے اسرائیلی وجود کو تسلیم کرنے سے انکار کیا اور نہتے مسلمانوں نے اس ناجائز قبضٗے کے خلاف جدوجہد کا آغاز کیا۔امریکی فیصلے کو نہ صرف یہ کہ کئی مغربی ممالک نے مسترد کیا بلکہ خود امریکی عوام ٹرمپ کے اس فیصلے کو پاگل پن سے تعبیر کررہے ہیں ۔ ہماری جماعت ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف ترکی کے صدر رجب طیب اردگان کے جرات مندانہ موقف اور ملائیشیا کی جانب سے ضرورت پڑنے پر بیت المقدس افواج بھیجنے کے اعلان کا بھی خیر مقدم کرتی ہے اور اسے پوری دنیا کے مسلمانوں کے جذبات و احساسات کا ترجمان سمجھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ بیت المقدس مسلمانوں کا روحانی مرکز اور عقیدت کا سرچشمہ ہے ۔ اس موقع پر مولانا انس مدنی نے کہا کہ امریکی صدر نے اپنے اعلان کے ذریعے پوری دنیا کے امن کو تہہ وبالا کرنے کی کوشش کی ہے ۔بیت المقدس کی حرمت اور تقدس سرخ لکیر ہے امریکہ اوراس کے حواریوں نے اس لکیر کو عبور کرکے دنیا بھر کے ڈیڑھ ارب مسلمانوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی ہے ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر