وزیر اعظم کی نواز،شہباز شریف سے ملاقات،نئے انتخابات ،فاٹا اصلاحات بل پر مشاورت

وزیر اعظم کی نواز،شہباز شریف سے ملاقات،نئے انتخابات ،فاٹا اصلاحات بل پر ...

لاہور/رائے ونڈ (مانیٹرنگ ڈیسک+نیوزایجنسیاں) وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے جاتی امراء میں گزشتہ روز نواز شریف اور شہباز شریف سے ملاقات کی اور الیکشن 2018ء کی تیاریوں اور فاٹا اصلاحات بل سمیت دیگر امور پر مشاورت کی۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی لاہور پہنچے تو وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے ان کا استقبال کیا۔ وفاقی وزراء انوشہ رحمان، خرم دستگیر، مریم اورنگزیب اور رانا تنویر بھی وزیر اعظم کے ہمراہ تھے۔ وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی بذریعہ ہیلی کاپٹر لاہور سے نواز شریف کی رہائشگاہ جاتی امراء رائے ونڈ پہنچے جہاں انہوں نے شہباز شریف اور دیگر رفقاء کے ہمراہ پارٹی صدر اور سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف کی زیرصدارت اجلاس میں شرکت کی۔اجلاس کے شرکاء نے فاٹا اصلاحات کے معاملے پر تبادلہ خیال کیا۔ اجلاس میں شرکاء نے مولانا فضل الرحمان سمیت دیگر حکومتی حلیفوں کے تحفظات دور کرنے اور پارلیمنٹ میں سیاسی جماعتوں کے قائدین سے رابطے تیز کرنے پر اتفاق کیا۔اس موقع پر سابق وزیر اعظم میاں نواز شریف نے کہا کہ ہم پارلیمنٹ سمیت تمام اداروں کی مضبوطی چاہتے ہیں، 2018ء انتخابات کا سال ہے لہٰذا عوام اور کارکنوں سے رابطے میں تیزی لائی جائے۔نواز شریف کا کہنا تھا کہ جمہور کی مضبوطی کیلئے ہر طرح کی قربانی دینے کو تیار ہیں تاہم، شفاف احتساب ہوتا ہوا نظر نہیں آ رہا، ٹارگٹڈ احتساب قوم کو کسی صورت قبول نہیں۔وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ مسلم لیگ نون میاں نواز شریف کی قیادت میں متحد ہے اور 2018کے انتخابات مسلم لیگ ن نواز شریف کی قیادت میں لڑے گی ۔آئی این پی کے مطابق اس سے پہلے میاں نوازشر یف کے زیرصدارت ہونیوالے مسلم لیگ ن کے غیر رسمی اجلاس میں امیاں نوازشر یف نے ایک بار پھر وزارت عظمی کیلئے شہباز شریف کو موزوں ترین امیدوار قرار دیدیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق جمعرات کے روز (ن) لیگ کے صدر میاں نوازشر یف کی زیر صدارت (ن) لیگ کا غیر رسمی مشاورت اجلاس ہوا جس میں (ن) لیگ کے سینیٹر پرویز رشیدْ وفاقی وزیر دانیا ل عزیز اورمشیر وزیراعظم عرفان صدیقی سمیت دیگر شریک ہوئے ذرائع کے مطابق نواز شریف نے ساری توجہ تحریک عدل پر مرکوز کی ہوئی ہے، تحریک عدل میں سڑکوں پر احتجاج، لانگ مارچ یا دھرنے نہیں ہوں بلکہ یہ الیکشن 2018 کی مہم کا حصہ ہوگی اور لوگوں تک صرف آگاہی پہنچائی جائے گی تحریک عدل کیلئے تھنک ٹینک بنایا جا رہا ہے جس میں سیاسی رہنماؤں کے علاوہ وکلا بھی شامل ہوں گے یہ تھنک ٹینک تحریک عدل کے خدو خال طے کرے گا اور حکومت کے کام میں عدلیہ کی مداخلت روکنے کی تجاویز دے گا اجلاس کے دوران نواز شریف نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میرے اور شہباز شریف کے درمیان کوئی کنفیوژن نہیں ہے، شہباز شریف نے میری رائے سے کبھی اختلاف نہیں کیا اور نہ ہی کسی بات سے کبھی انحراف کیا ہے، شہباز شریف سے میرا پیار کا رشتہ ہے ، آئندہ الیکشن کے بعد وزارت عظمی کیلئے شہباز شریف سے بہتر کوئی امیدوار نہیں ہے کیونکہ ان کا انتظامی امور کا تجربہ بھی ہے۔انہوں نے کہا کہ (ن) لیگ اپنی عوام دوست پالیسوں کی وجہ سے قوم کے دلوں میں بستی ہے اور ہم نے ہمیشہ ملک آئین وقانون کی بات کی ہے ہم اقتدار نہیں اقدار کی سیاست کرتے ہیں اس لیے اصولوں پر سمجھو تے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ہم حق اور سچ کیلئے ہر قر بانی دینے کوتیار ہیں۔

ملاقات

مزید : کراچی صفحہ اول