جے یو آئی ضلع مالاکنڈ کے مجلس شوری و عاملہ کا مشترکہ اجلاس

جے یو آئی ضلع مالاکنڈ کے مجلس شوری و عاملہ کا مشترکہ اجلاس

  

سخاکوٹ(نمائندہ پاکستان)جے یو آئی ضلع مالاکنڈ کے مجلس شوری و عاملہ کا مشترکہ اجلاس۔مساجد و دینی مدارس کی رجسٹریشن فارم کے ذریعے دبانے کا عمل مسترد۔ گرفتار علما کو فوری رہا کرنے کا مطالبہ۔  مالاکنڈ میں نان کسٹم پیڈ کٹ گاڑیوں کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر مالاکنڈ ریحان گل خٹک کے فیصلے پر اظہار اطمینان۔ ضلع مالاکنڈ میں چوری و ڈاکہ زنی اور اغوا کی واردات  مں اضافہ پر تشویش کا اظہار۔ 23دسمبر کو مردان میں پی ڈی ایم کی ریلی میں قافلوں کی صورت میں بھر پور شرکت کیلئے لائحہ عمل تیار۔ تفصیلات کے مطابق: جے یو آئی ضلع مالاکنڈ کے مجلس شوری و عاملہ کا مشترکہ اجلاس زیر صدارت ضلعی امیر شیخ الحدیث و القرآن مفتی کفایت اللہ ضلعی دفتر سخاکوٹ میں منعقد کیا گیا۔ اجلاس میں ضلعی جنرل سکرٹری مولانا سلمان تاثیر خان، مفتی شوکت علی، مولانا فضل اللہ شاہ، مولانا صوفی معراج الحق صفدر، مولانا محمد سہراب خان، ضلعی سکرٹری اطلاعات فضل وہاب عارف، تحصیل امیر بٹ خیلہ مولانا حنیف الرحمان، فضل حق، مولانا عزیز الرحیم، مولانا ضیا الرحمان، میاں ناصر باچہ، مولانا بصیر الحق سمیت ضلعی مجلس شوری و عاملہ کے تمام اراکین نے شرکت کی۔ اجلاس کے دوران مالاکنڈ میں مساجد و دینی مدارس کی رجسٹریشن فارم کے ذریعے دبانے کا عمل مسترد کیا گیا اور واضح کیا گیا کی وفاق المدارس نے جس رجسٹریشن فارم کو پہلے ہی مسترد کردیا ہے اس کے ذریعے مالاکنڈ میں دینی مدارس، علما کرام اور مساجد کے آئمہ کرام کو زیر دباؤ لانے کی کوشش ترک کرلینی چاہئے۔ اجلاس میں بے گناہ گرفتار علما کو فوری رہا کرنے کا مطالبہ بھی کیا گیا جبکہ مالاکنڈ میں نان کسٹم پیڈ کٹ گاڑیوں کے حوالے سے ڈپٹی کمشنر مالاکنڈ ریحان گل خٹک کے فیصلے پر اظہار اطمینان کرتے ہوئے مالاکنڈ میں کاروبار کو فروغ دینے پر زور دیا گیا۔ اجلاس سے اپنے خطاب میں ضلعی امیر شیخ الحدیث والقرآن مفتی کفایت اللہ، مولانا سلمان تاثیر خان و دیگر مقررین نے ضلع مالاکنڈ میں چوری و ڈاکہ زنی  اور اغوا کی واردات میں اضافہ پر تشویش کا اظہار کیا اور ممتاز عالم دین مولانا حبیب گل کے مدرسہ میں ڈکیتی کے ملزمان کی فوری گرفتاری اور چوری کردہ رقم واپس دلانے کئلئے عملی اقدامات پر زور دیا گیا۔ اجلاس میں  23دسمبر کو مردان میں پی ڈی ایم کی ریلی میں قافلوں کی صورت میں بھر پور شرکت کیلئے لائحہ عمل بھی تیار کرلیا گیا اور مالاکنڈ کے تمام یونین کونسلوں سے کارکنان کی کثیر تعداد میں شرکت کیلئے ذمہ داریاں تفویض کی گئی۔                                   

مزید :

پشاورصفحہ آخر -