تحصیل شبقدر میں اموات  کی بڑھتی ہوئی شرح کوڈ 19 نے خطرے کی گھنٹی بجھادی

  تحصیل شبقدر میں اموات  کی بڑھتی ہوئی شرح کوڈ 19 نے خطرے کی گھنٹی بجھادی

  

شبقدر(نامہ نگار) تحصیل شبقدر میں اموات کی بڑھتی ہوئی شرح کوڈ 19نے خطرے کی گھنٹی بجھادی۔ ہسپتال میں ناکافی سہولیات کے باعث ٹسٹ نہ ہونے کے برابر ہے۔ ایمرجنسی بنیادوں پر انتظامات کی ضرورت ہے۔ تفصیلات کے مطابق دوران ہفتہ تحصیل شبقدر میں اموات کی شرح میں خطرناک حدتک اضافہ ہورہا ہے جس میں کوڈ19سے اموات کا شبہ ظاہر کیا جارہا ہے مگر تحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال میں ٹسٹوں کا فقدان اور خوب سے ڈاکٹر سے معائنہ نہ کرانے کے باعث مسئلہ گمبھیر ہوتا جارہا ہے گزشتہ دوروز میں نادرہ کا اہلکار محمد نثار سکنہ دلہ زاک کی موت بھی کرونا سے ہوئی۔ جب اس وقت ایک نامور وکیل کا ٹیسٹ مثبت آنے کے باعث قرنطینہ میں ہے خوبئی کا ایک شخص شدید حالت کے باعث ہسپتال میں زیر علاج ہے ضرورت اس آمر کی ہے کہ حکومتی ادارے عوام میں اگاہی پیدا کریں اور بازاروں میں ماسک کا استعمال لازمی قرار دیں اور شہری ذمہ داری کا مظاہرہ کرکے احتیاطی تدابیر پر عمل کرے ورنہ کسی بھی وقت بھی کرونا تحصیل شبقدر میں خطرناک شکل اختیار کرسکتی ہے۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -