''پاکستان میں کورونا بیماری نہیں ہے،، منفرد درخواست دینے والے شہری کو عدالت کی جانب سے بڑی سزا

''پاکستان میں کورونا بیماری نہیں ہے،، منفرد درخواست دینے والے شہری کو عدالت ...
''پاکستان میں کورونا بیماری نہیں ہے،، منفرد درخواست دینے والے شہری کو عدالت کی جانب سے بڑی سزا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)لاہور ہائی کورٹ نے اپنی نوعیت کی منفرد درخواست دائر کرنے  پر شہری کو کڑی سزا دے دی، شہری کا مؤقف تھا کہ ملک میں کورونا وائرس نام کی کوئی بیماری نہیں ہے۔عدالت نے دعوی مسترد کرتے ہوئے شہری پر 2 لاکھ روپے جرمانہ عائد کردیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق لاہور ہائیکورٹ میں ملک میں کورونا وائرس نہ ہونے کا دعویٰ کرنے سے متعلق درخواست کی سماعت ہوئی، سماعت کے بعد عدالت نے اسے غیر ضروری قرار دے کر  مسترد کر تے ہوئے  دعویٰ کرنے والے شہری پر 2لاکھ روپے جرمانہ عائد کردیا۔درخواست گزار نے کہا کہ کورونا بہت سنگین ہوچکا ہے، جواب میں عدالت نے کہا کہ آپ تو کہتے ہیں کہ ملک میں کورونا وائرس ہی نہیں ہے، جس پر درخواست گزار کا کہنا تھا کہ پاکستان میں لاکھوں لوگ ہرسال ملیریا سے مرجاتے ہیں۔عدالت نے درخواست گزار سے کہا کہ آپ کیا چاہتے ہیں کہ ملیریا کا علاج نہ کرائیں؟ جج نے شہری کو متنبہ کیا کہ آپ کورونا وائرس کے نہ ہونے سے متعلق دلائل دیں۔درخواست گزار کا کہنا تھا کہ یہ تمام نشانیاں اور بیماریاں زمانہ جاہلیت کی ہیں۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ آپ مجھے اصل بات بتائیں آئیں بائیں شائیں نہ کریں۔آپ کوئی اتھارٹی نہیں ہیں، عدالت کیلئے اتھارٹی کا بیان مستند ہوتا ہے کیونکہ ڈاکٹر کی ملیریا رپورٹ کو لوگ مانیں گے ہائی کورٹ جج کے کہنے پر نہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -