کیون پیٹرسن کے کیریئر کو ختم کرنے میں میرا ہاتھ نہیں، سٹورٹ براڈ

کیون پیٹرسن کے کیریئر کو ختم کرنے میں میرا ہاتھ نہیں، سٹورٹ براڈ

لندن (سپورٹس ڈےسک)انگلش کرکٹ ٹیم کے کپتان سٹورٹ براڈ نے کہا ہے کہ دورہ آسٹریلیا میں مایوس کن کارکردگی نے سلیکٹرز کو ٹیم میں تبدیلیاں کرنے پر مجبور کر دیا اور کیون پیٹرسن کے کیریئر کا ختم ہونا بھی اسی کا نتیجہ ہے۔ گزشتہ روز دورہ ویسٹ انڈیز کیلئے روانگی سے قبل پریس کانفرنس کرتے ہوئے سٹورٹ براڈ نے کہا کہ یہ بات درست ہے کہ دورہ آسٹریلیا کے ختم ہوتے وقت کیون پیٹرسن کے حوالے سے باتیں چل رہی تھیں لیکن ان کے کیریئر کو ختم کرنے میں میرا کوئی ہاتھ نہیں، سلیکٹرز نے جو بھی فیصلہ کیا ہے سوچ سمجھ کر کیا ہو گا اور میرے خیال میں یہ اقدام ٹیم کے وسیع مفاد میں بہتر ثابت ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ سلیکٹرز نے ٹیم کی کارکردگی میں بہتری لانے کیلئے سخت فیصلے کئے ہیں اور اب ہم سب کی توجہ ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز پر مرکوز ہے، کوشش ہو گی کہ عمدہ پرفارم کر کے سیریز اپنے نام کریں۔ فاسٹ باﺅلر نے کہا کہ بلا شبہ پیٹرسن شاندار پلیئر تھے اور 2010ءمیں ان کی ٹیم کو ٹی ٹونٹی چیمپئن بنانے کے حوالے سے خدمات کو فراموش نہیں کیا جا سکتا لیکن اب وقت آ گیا ہے کہ نوجوان کھلاڑی اپنے اندر جیت کی لگن پیدا کریں اور انہیں یہ جان جانا چاہیے کہ وہی میچ ونرز ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ دورہ آسٹریلیا ہمارے لئے کافی مایوس کن ثابت ہوا، سیریز میں شکستوں کے ساتھ ساتھ ہمیں پیٹرسن، گریم سوان اور اینڈی فلاور کے جانے کا بھی دکھ ہے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی