چینی اب افریقی گدھے کھائیں گے

چینی اب افریقی گدھے کھائیں گے
چینی اب افریقی گدھے کھائیں گے

  

نیروبی(مانیٹرنگ ڈیسک)کینیا میں گدھوں کا گوشت فراہم کرنے والے پہلے سلاٹر ہاو¿س کی منظوری کے بعد لگتا ہے کہ چین میں گوشت کی بے پناہ کو پورا کیا جا سکے گا۔یہ افریقہ بھر میں ایسا پہلا سلاٹر ہائوس ہے جہاں گدھوں کو ذبح کیا جائے گا۔روزنامہ کینیا سٹینڈرڈ سے بات کرتے ہوئے سلاٹر ہائوس کے مالک جان گونجو کاریوکی کا کہنا ہے کہ چین میں گدھوں کے گوشت کی مانگ بہت زیادہ ہے اور وہ اس مانگ کو پورا کرلیں گے ۔مذکورہ مذبح خانے کینیا کے قصبے نیویشا میں قائم کیا جائے گا۔ قصبے کے مکینوں کو اُمید ہے کہ لائسنس یافتہ مذبح خانے کے قیام سے ان کی جان سڑک کے کنارے بکھری ہوئی ان ہڈیوں سے چھوٹ جائے گی جو گدھوں کا گوشت بنانے والے غیر قانونی تاجر وہاں پھینک جاتے تھے۔واضح رہے کہ جوں جوں چین میں لوگ دولت مند ہو رہے ہیں ،وہ شہروں کا رُخ کر رہے ہیں جس سے ملک میں خوراک کی ضرورت میں ڈرامائی تبدیلیاں آرہی ہیں۔چین کے روزنامہ سائوتھ چائنہ مارننگ پوسٹ کے بقول گوشت فرہم کرنے والے تاجروں کو مانگ میں اس قدر زیادہ اضافے کو پورا کرنے مشکل پیش آرہی ہے۔ملک کے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 30برس پہلے کے مقابلے میں لوگ آج دو گنا زیادہ گوشت کھا رہے ہیں اور دودھ دہی وغیرہ کی مانگ میں بھی تین گنا زیادہ اضافہ ہو چکا ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس