نواز شریف کی نااہلی،سپریم کورٹ نے اپنا آئینی اختیار استعمال کیا،شیخ جمشید حیات

نواز شریف کی نااہلی،سپریم کورٹ نے اپنا آئینی اختیار استعمال کیا،شیخ جمشید ...

ملتان(سپیشل رپورٹر)سینئر قانون دان و سابق صدر ہائیکورٹ بار ملتان شیخ جمشید حیات ایڈووکیٹ نے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شیرف کی بطور پارٹی صدارت نااہل قرار دئیے جانے(بقیہ نمبر29صفحہ12پر )

کے فیصلے پر اپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کو آئینی طور پر یہ اختیار حاصل ہے کہ وہ ایسے معاملات جن پر قانون میں کوئی واضع حل موجود نہیں ہے اس پر تشریح کرکے فیصلہ دے سکتی ہے اور اس تاریخی فیصلے میں سپریم کورٹ آف پاکستان نے اپنا آئینی اختیار استعمال کرتے ہوئے ملک و قوم کی بہتری کیلئے فیصلہ دیا ہے جس کے تحت میاں محمد نواز شریف قطعی طور پر نااہل قرار دئیے جاچکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان کی یہ نااہلی اسی تاریخ سے گنی جائے گی جب انہیں بطور وزیراعظم نااہل قرار دیا گیا تھا۔انہوں نے کہا کہ اس فیصلے کے بعد میاں محمد نواز شریف نے بطور پارٹی صدر جوبھی فیصلے کئے ہیں وہ کالعدم ہوچکے ہیں۔لہذا مناسب یہی ہوگا کہ سینٹ الیکشن فوری طور پر مؤخر کرتے ہوئے نیا شیڈول جاری کیا جائے۔اور اس فیصلے کی روشنی میں حکمران جماعت کے جو سینیٹ امیدوار متاثر ہوئے ہیں انہیں نوٹس جاری کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ اس فیصلے کی روشنی میں لودھراں الیکشن فوری طور پر متاثر نہیں ہوگا۔شیخ جمشید حیات ایڈووکیٹ نے مزید کہا کہ قوم کو اب یہ عادت ڈال لینی چاہیے کہ انہیں عدالتوں کے فیصلوں کو تسلیم کرنا ہے کیونکہ اگر سپریم کورٹ کے فیصلوں کو تسلیم نہ کیا گیا تو ملک کی بنیادیں ہل سکتیں ہیں اس صورت میں یہ صورتحال ملک و قوم کیلئے انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتی ہے انہوں نے کہا کہ’’میں نہ مانوں‘‘کی پالیسی ملکی مفاد میں نہیں ہے۔اس سے ملک و قوم دونوں کا نقصان ہوگا۔

مزید : ملتان صفحہ آخر