جمہوریت پر شب خون مارنے کی کوششوں کو میڈیا نے بھی ناکام بنایا: مریم اورنگزیب

جمہوریت پر شب خون مارنے کی کوششوں کو میڈیا نے بھی ناکام بنایا: مریم اورنگزیب

اسلام آباد (آئی این پی) وزیرمملکت برائے اطلاعا ت و نشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے چین پاکستان اقتصادی راہداری میں میڈیا کا کردار بہت اہم ہے ،سی پیک کی کامیابی ہم سب کی کامیابی ہے، یورپ سمیت دنیا کے دیگر ممالک سی پیک میں دلچسپی لے رہے ہیں، آنے والی نسلوں کا معاشی تحفظ بھی اسی سے وابستہ ہے،صحافت اور جمہوریت کا گہرا رشتہ ہے،جمہوریت ایک رویے کا نام ہے، صحافت جمہوریت کے بغیر ممکن نہیں،بدھ کو کونسل آف پاکستان نیوز پیپر ایڈیٹرز (سی پی این ای)کے زیر اہتمام ’’ملک کو درپیش چیلنجز اور میڈیا کے کردار ‘‘کے موضوع پر سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انکا مزید کہنا تھا آج کے دور میں صحافی جو سوچتے ہیں وہ لکھتے ہیں جو دیکھتے ہیں وہ بولتے ہیں ، آ مر یت کے دور میں اخبارات خالی چھپنے کی روایت آج سب کے سامنے ہیں ٹی وی پروگرامز سینسر ہوتے رہے ہیں گزشتہ ساڑھے چار سال جمہوریت پر شب خون مارنے کی کوشش کی گئی جسے میڈیا نے کامیاب نہیں ہونے دیا، میری کوشش ہے اپنے دور حکومت کے خاتمہ سے پہلے صحافیوں کے تحفظ کیلئے پارلیمنٹ سے قانون پاس کراکے جاؤں ، اور پیمرا میں میڈیا کی نمائندگی کو یقینی بناؤں تاکہ پیمرا کی شفافیت برقرار رہے ، صحافیوں کے وزیراعظم سے کئے گئے مطالبات پر کام جاری ہے اور سی پی این ای کی جانب سے درخواست کردہ پلاٹ کی نامزدگی کردی گئی ہے، میرا مقصد صحافیوں کے مسئلے مسائل کا حل تلاش کرنا ہے جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما افراسیاب خٹک نے کہا میثاق جمہوریت میں یہ طے ہو گیا تھا کہ سپریم کورٹ کے علاوہ ایک آئینی عدالت بھی قائم کی جائے گی تاہم اس معاملے کو آگے نہیں بڑھایا گیا، آئینی عدالت قائم کر دی جاتی تو آج کل جو مسائل ہمارے سامنے ہیں وہ نہ ہوتے، جبکہ جماعت اسلامی کے امیر سینیٹر سراج الحق نے کہا ملک کا سب سے اہم مسئلہ قانون و آئین کی حکمرانی ہے، یہ حکمرانی چوکیدار اور ٹیکسی ڈرائیور پرقائم ہونے سے نہیں بنتی اس کا مقصد ملکی اشرافیہ اور قیادت پر قانون کا احترام لازم کرواناہے، سینیٹر شیری رحمان نے کہا سیاست اور صحافت کو کوئی علیحدہ نہیں کرسکتا، دونوں کا چولی دامن کا ساتھ ہے، جمعیت علماء اسلام(ف)کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا جمہوری دنیا میں سیاست اور صحافت دو ایسی وابستہ چیزیں ہیں جو ایک دوسرے کے بغیر مکمل نہیں ہوتیں، ادارے ایسے فیصلے نہ دیں جن سے انتقام کی بو آئے۔اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کے سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہر شعبہ میں احتساب کا عمل ہوتا ہے اور صحافیوں کو روز احتساب کے عمل سے گزرنا پڑتا ہے، اصولوں پر قائم رہنے سے عزت ملتی ہے، تقریب سے سی پی این ای کے عہدیداروں نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا اور جمہوری نظام میں میڈیا کے کردار پر روشنی ڈالی۔

مزید : صفحہ آخر