نواز شریف مائنس نہیں ہونگے ، جسے وہ کہیں گے وہی پارٹی صدر ہو گا : مسلم لیگ (ن)

نواز شریف مائنس نہیں ہونگے ، جسے وہ کہیں گے وہی پارٹی صدر ہو گا : مسلم لیگ (ن)

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ،این این آئی) میاں نواز شریف کو پارٹی صدارت کیلئے نااہل قرار دینے پر مسلم لیگ ن نے شدید رد عمل کا اضہار کیا ہے وزیر مملکت برائے اطلاعات ونشریات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد نواز شریف کے بیانئے کو مزید تقویت ملے گی۔ کمزور فیصلے کے دفاع میں سارے فیصلے آرہے ہیں، مسلم لیگ (ن) کے فیصلے نواز شریف ہی کرینگے، ہماری پارٹی کی جو بھی حکمت عملی ہواس پر نواز شریف کی مہر ثبت ہوگی۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سپریم کورٹ کے فیصلے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے مریم اورنگزیب نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے سے پاکستان مسلم لیگ (ن) اور نواز شریف کے بیانئے کو تقویت ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ کمزور فیصلے کے دفاع میں سارے فیصلے آرہے ہیں۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ سینیٹ کا الیکشن وقت اور پاکستان کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو فیصلہ آیا ہے اسی طرح کی توقع تھی۔ ملک ایک ہی شخص کو ٹارگٹ کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف عوام کے دلوں میں رہتے ہیں۔ انہیں ایسے فیصلوں کے ذریعے عوام سے دور نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ ہماری پارٹی کی جو بھی حکمت عملی ہواس پر نواز شریف کی مہر ثبت ہوگی۔وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چودھری نے کہا ہے کہ اس طرح کے فیصلوں سے نواز شریف مائنس نہیں ہو گا۔ سیدھی طرح کہہ دیا جائے مسلم لیگ (ن) کو الیکشن میں حصہ نہیں لینے دینگے، کیا پاکستان اس طرح کے فیصلوں کا متحمل ہوسکتا ہے؟، نواز شریف کسی پارٹی صدارت کا مرہون منت نہیں جسے وہ کہے گا وہی پارٹی صدر ہوگا۔نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ نواز شریف کی پارٹی صدارت سے نااہلی کے فیصلے سے کوئی فرق نہیں پڑتا، جب تک اس جماعت کا نام مسلم لیگ (ن) ہے اس پارٹی کے تمام فیصلے نواز شریف کی مرضی سے ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ بتایا جائے کہ کیا پاکستان اس طرح کے فیصلوں کا متحمل ہوسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف ملک کے ایک مقبول لیڈر ہیں اگر مقبول لیڈر کیساتھ عوام ہو تو اسے کسی اور چیز کی ضرورت نہیں رہتی۔ نواز شریف کو روکا نہیں جاسکتا۔ نواز شریف کو روکنے کیلئے کوئی بھی سیاسی طریقہ کامیاب نہیں ہورہا سیدھی طرح کہہ دیا جائے کہ نواز شریف کو ملکی سیاست میں حصہ لینے نہیں دیا جائے گا تاہم یہ عمل ملک کیلئے انتہائی نقصان دہ ہے۔ طلال چودھری نے کہا کہ پارلیمنٹ کے نیچے آئین ہوتا ہے، آئین کے نیچے پارلیمنٹ نہیں ہوتی۔ اگر پاکستان میں کوئی نیا سسٹم لانا ہے تو کوئی اور بات ہے۔ دنیا بھر کے جمہوری نظام میں یہی ہوتا ہے پارلیمنٹ قانون بناتی ہے اور پھر اس پر عمل ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسے فیصلوں سے نواز شریف کی مقبولیت کم نہیں ہو رہی۔ یاد رکھیں کہ نواز شریف جس پر ہاتھ رکھیں گے وہی جیتے گا۔ سائن کوئی زیڈ کرے یا بکر اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔ نواز شریف کسی پارٹی صدارت کا مرہون منت نہیں جسے وہ کہے گا وہی پارٹی صدر ہوگا۔ مسلم لیگ ن کے سیکرٹری اطلاعات اور وزیر موسمیاتی تبدیلی سینیٹر مشاہد اللہ خان نے کہا ہے کہ پارلیمینٹ کے فیصلوں کی بھی کوئی توقیر ہونی چاہیے پارلیمینٹ میں سب کو اس معاملے پر سر جوڑ کر بیٹھنا چاہیے نواز شریف نہ صرف ہماری جماعت بلکہ پورے ملک کے قائد ہیں اور وہی ہمارے قائد رہیں گے پارٹی صدارت کے حوالے سے رسمی طور پر جو آئینی و قانونی ضرورت ہو گی ظاہر ہے وہ پوری ہو گی ان خیالا ت کا اظہار انہوں نے بُدھ کو سینیٹ اجلاس کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا سپریم کورٹ کیطرف سے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو پارٹی صدارت کے لیے بھی نااہل قرار دینے سے متعلق فیصلے پر اپنے رد عمل میں سینیٹر مشاہد اللہ خان نے زیادہ تر اشعار کا سہارا لیا اور یہ اشعار بھی پڑھے اور ہی ہوں گے کم ہمت جو ظلم وتشدد سہہ نہ سکے ۔شمشیرو سناکے دھاروں پر روداد صداقت کہہ نہ سکے ۔مسلم لیگ ن کے سیکرٹری اطلاعات نے کہا کہ عدالتی فیصلے کے نتیجے میں میاں محمد نواز شریف مزید مقبول ہو جائیں گے وہ ہماری پارٹی نہیں بلکہ پورے ملک کے قائد بن چکے ہیں وہی ہمارے قائد ہیں اور رہیں گے انہوں نے کہا کہ نواز شریف پورے پاکستان کے لیے نجات دہندہ ہیں ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پارٹی صدارت کے حوالے سے آئینی و قانونی ضرورت کو پورا کیا جائے گا سب کو پارلیمینٹ میں سر جوڑ کر بیٹھنا چاہیے کہ پارلیمینٹ کی بھی کوئی عزت ہونی چاہیے پارلیمینٹ کے فیصلوں کو بھی کوئی احترام ہونا چاہیے پارلیمینٹ کی قانون سازی کی توقیر ہونی چاہیے پارلیمینٹ کو اپنی عزت و احترام خود کروانی ہے اور وقت آگیا ہے کہ سب سر جوڑ کر بیٹھ جائیں انہوں نے کہا کہ عوام اصل منصف ہیں صحیح اور غلط کے بارے میں بہترین منصف ہیں نواز شریف کی صحت پر کیا اثر پڑے گا وہ پہلے سے زیادہ مقبول ہو جائے گاامسلم لیگ(ن )کے چیئرمین راجہ ظفر الحق نے کہا ہے کہ عہدے آنی جانی چیزیں ہیں، ہماری قیادت بیٹھ کر پارٹی صدارت پر فیصلہ کرے گی، شہباز شریف کو پارٹی صدر بنانے کا ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا۔ بدھ کے روز سپریم کورٹ کے نواز شریف کی پارٹی صدارت سے نا اہلی کے فیصلے پر ردعمل دیتے ہوئے چیئرمین مسلم لیگ ن راجہ ظفر الحق نے کہا کہ عہدے آنی جانی چیزیں ہیں، ہماری قیادت بیٹھ کر پارٹی صدارت پر فیصلہ کرے گی،شہباز شریف کو پارٹی صدر بنانے کا ابھی کوئی فیصلہ نہیں ہوا، نواز شریف پاکستان کے سب سے تجربہ کار اور بڑے لیڈر ہیں،ان کی لیڈرشپ کو کوئی نہیں روک سکتا۔مصدق ملک نے کہا کہ عوام کا ردعمل کیسے روکا جائیگا، عدالتی فیصلے کے ذریعے پارٹی سے تو ہٹا دیا لیکن دلوں سے کیسے ہٹائیں گے۔

مسلم لیگ ن

مزید : صفحہ اول