محکمہ تعلیم میں انلقابی اصلاحات اور ٹھوس اقدامات اٹھائے ہیں : محمد عاطف خان

محکمہ تعلیم میں انلقابی اصلاحات اور ٹھوس اقدامات اٹھائے ہیں : محمد عاطف خان

پشاور( سٹاف رپورٹر)صوبائی وزیر تعلیم محمد عاطف خان نے کہا ہے کہ موجودہ صوبائی حکومت نے محکمہ تعلیم میں انقلابی اصلاحات کی ہیں جسکی وجہ سے آج صوبے کے تعلیمی نظام میں اہم تبدیلیاں رونما ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ الف اعلان کی رپورٹ کے مطابق پورے پاکستان کے بہترین 10اضلاع میں خیبر پختونخوا کے 9اضلاع شامل ہیں جو کہ ہماری کارکردگی اور بہترین پالیسی کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔ وہ انصاف ٹیچرز ایسوسی ایشن کے وفد سے اپنے دفتر پشاور میں بات چیت کررہے تھے۔ جنہوں نے صوبائی قائدین بخت افسر خان ، وہاب منصوری، فضل حسین ، محمد شیر اور عزیز اللہ خان کی قیادت میں ان سے ملاقات کی۔ اس موقع پر محمد عاطف خان نے کہا کہ پچھلے دور حکومت میں صرف 7ہزار اساتذہ بھرتی ہوئے تھے تاہم ہماری ذاتی کوششوں اور تعلیمی میدان میں بہتری لانے کی وجہ سے ہم نے 40ہزار اساتذہ کو میرٹ پر بھرتی کیا اور مزید 17ہزار اساتذہ اور بھی بھرتی کررہے ہیں۔ اسی طرح ٹیچرز ٹریننگ بھی شروع ہے تاکہ موجودہ اساتذہ کی استعداد کار میں نکھار لایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے محکمہ تعلیم میں سزا اور جز ا کا نظام متعارف کرایا ہے اور بہترین اساتذہ کو 84کروڑ روپے بطورانعام دئیے گئے ہیں جبکہ خراب کارکردگی کی وجہ سے اساتذہ کو جرمانہ بھی کیاگیا ہے۔ صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ تعلیم سے قومیں بنتی ہیں اس لئے ہم نے اس شعبے کو ابتدائی دنوں سے ترجیح دی ہے ، ہم نے نہ صرف نئے سکول بنائے ہیں بلکہ سکولوں کو اپ گریڈ بھی کیا ہے ، ان میں بنیادی سہولیات کی فراہمی پر بھی کروڑوں روپے خرچ کئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے تعلیم کے میدان میں وہ اصلاحات متعارف کرائی ہیں جسکے ثمرات آنیوالے وقتوں میں لوگوں کو ملیں گے۔ ہماری بہترین سہولیات اور بہترین تعلیم کی وجہ سے لوگ پرائیویٹ سکولوں سے سرکاری سکولوں کا رخ کررہے ہیں۔ محمد عاطف خان نے انصاف ٹیچرز ایسوسی ایشن کے کردار کی تعریف کی اور کہا کہ ہم سب کی یہی کوشش ہے کہ ہم اپنے آنیوالے وقت اور اپنے مستقبل کی خاطر محکمہ تعلیم کو توجہ دیں اس ضمن میں اساتذہ کرام کی بھی ذمہ دار ی بنتی ہے کہ وہ پوری لگن اور جذبہء حب الوطنی کیساتھ ہمارے شانہ بشانہ کام کریں۔ انہوں نے کہا کہ ہم اساتذہ کرام کو سپورٹ کرتے ہیں ہم نے ان کے تمام مطالبات پورے کئے ہیں ، ان کو اپ گریڈیشن بھی دی ہے ۔ ایڈہاک ، این ٹی ایس اساتذہ کو ریگولر بھی کیا ہے ، اسی طرح ہماری کوشش ہے کہ ہم جلد از جلد اساتذہ کو ٹائم سکیل دیں اور انکی پروموشن کی پالیسی بھی بنائیں۔ اس پر محکمہ تعلیم نے کام شروع کررکھا ہے اور تمام قانونی تقاضوں اور منظوری کے بعد اساتذہ کو ٹائم سکیل بھی دیا جائیگا۔ صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ اس پالیسی کے مطابق ہم اساتذہ کرام کو سیاسی اثر رسوخ اور بیرونی دباؤ سے آزاد کررہے ہیں تاکہ وہ حقیقی معنوں میں قوم کا مستقبل سنوار سکیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے نوجوانوں میں بے پناہ صلاحیت موجود ہے مگر مواقعوں کی کمی تھی اب ہم ان کو سہولیات بھی دے رہے ہیں اور آگے بڑھنے کے مواقع بھی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر