پاکستان اور سعودی عرب میں  روایتی طور پر بہت خوشگوار اور اور برادرانہ تعلقات ہیں:  پیر سید صدرالدین شاہ راشدی

پاکستان اور سعودی عرب میں  روایتی طور پر بہت خوشگوار اور اور برادرانہ تعلقات ...
پاکستان اور سعودی عرب میں  روایتی طور پر بہت خوشگوار اور اور برادرانہ تعلقات ہیں:  پیر سید صدرالدین شاہ راشدی

  

جدہ (محمد اکرم اسد) وفاقی وزیربراۓ سمندر پار پاکستانی اور ترقی انسانی وسائل  پیر سید صدرالدین شاہ راشدی نے سعودی  لیبر اینڈ سوشل ڈویلپمنٹ کے وزیر علی بن نصیر ال غفیص کے سے ملاقات کی۔وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب میں  روایتی طور پر بہت خوشگوار اور اور برادرانہ تعلقات ہیں. وفاقی وزیر نے صدراور  وزیر اعظم پاکستان کی  جانب سے  سعودی فرمانروا  اور ولی عہد کیلئے نیک خواہشات کا پیغام پہنچایا. وفاقی وزیر نے سعودی وزیر کو او آئی سی  لیبر کانفرنس کی صدارت سنبھالنے اور  کامیاب کانفرنس منعقد کرنے پر مبارکباد دی. علی بن نصیر ال غفیص نے وفاقی وزیر کا شکریہ ادا کیا اور دونوں ممالک کے درمیان برادرانہ تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کے لئے اپنے عزم کا اظہار کیا.

وفاقی وزیر نے سعودی عرب کی جانب سے شروع کیے جانے والے بڑےترقیاتی  اقتصادی منصوبوں "نیوم"  اور کنگ عبداللہ سٹی کی تعریف کی اور   Vision 2030  کو سعودی عرب کا اسٹریٹجک اقتصادی ترقی کا منصوبہ  قرار دیا۔  وفاقی وزیر نے  محمد بن سلمان کی دور اندیشی کو سراہا۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ سی پیک بھی پاکستان کی اقتصادی  ترقیاتی کا منصوبہ ہے جس میں پاکستان میں سرمایہ کاری کے مواقع موجود ہیں۔ یہ  منصوبہ پاکستان کی معیشت کو تبدیل کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔پیر سید صدرالدین شاہ راشدی نے کہا کہ تقریبا 2.34 ملین پاکستانی سعودی عرب میں بسلسلہ روزگار مقیم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ  کہ دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات  کو اس نہج تک پہنچانے میں دیار غیر میں رہنے والےان  پاکستانیوں کا بڑا اہم کردار ہے ۔ وزیر نے بتایا کہ  پاکستان میں 4000  پیشہ ورانہ تربیتی اداروں سے  مختلف شعبہ جات میں  سالانہ 400،000 کارکن تربیت پا تے ہیں۔ یہ تربیت یافتہ ورک فورس   سعودی عرب  کی بڑھتی ہوئی  معاشی سرگرمیوں  میں تربیت یافتہ کارکنوں کی طلب پوری کرسکتے ہیں.وفاقی وزیر نے امید ظاہر کی کہ دونوں ملکوں کے درمیان گھریلو کارکنوں کے معاہدے کو جلد ہی حتمی شکل دی جائے گی. وفاقی وزیر نے سعودی وزیر کو پاکستان کے دورہ کی دعوت دی۔

مزید : عرب دنیا