جلال مسجد گلگشت میں کھلی کچہری‘ قبضہ مافیا‘ وارداتوں کیخلاف درخواستیں

جلال مسجد گلگشت میں کھلی کچہری‘ قبضہ مافیا‘ وارداتوں کیخلاف درخواستیں

  



ملتان (نیوز رپورٹر) ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرریونیو محمدطیب خان اور ممبر صوبائی اسمبلی ظہیرالدین خان علیزئی نے جلال مسجد گلگشت میں کھلی کچہری منعقد کی۔ایس پی گلگشت احمد اور تمام سرکاری محکموں کے افسران بھی اس موقع پر موجود تھے۔کھلی کچہری میں تاجر برادی، شہریوں اور خواتین کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔شہری گلگشت کے علاقے میں قبضہ مافیا اور ڈکیتی کی وارداتوں (بقیہ نمبر34صفحہ12پر)

کے خلاف پھٹ پڑے۔ایک خاتون اپنا گھر قبضہ مافیا سے واگزار کرانے کی درخواست کرتے ہوئے پھوٹ پھوٹ کر رو پڑی۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو نے محکمہ ر یو نیو سے 24 گھنٹے کے اندر رپورٹ خاتون کی درخواست پر طلب کر لی۔محمد طیب خان نے کھلی کچہری سے اپنے خطاب میں متاثرہ خاتون کو یقین دلایا کہ کہ ضلعی انتظامیہ میرٹ پر اس کیس کو دیکھے گی اور گھر کا قبضہ دلانے کے لیے مکمل سپورٹ کرے گی۔انہوں نے کہا کہ محکمہ ریونیو شہریوں کی جائیدادوں کا محافظ ہے اور کسی کو دوسروں کی جائیدادوں پر قبضے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ کھلی کچہریوں کا مقصد شہریوں کو انکی دہلیز پر انصاف مہیا کرنا ہے۔کھلی کچہری میں پیش کی جانے والی تمام درخوستوں کو مسلسل مانیٹر کیا جاتا ہے۔ممبر صوبائی اسمبلی ظہیرالدین خان علیزئی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کھلی کچہریوں کا انعقاد وزیر اعظم عمران خان کا وژن ہے۔وزیراعلیٰ عثمان بزدارکو ہر ضلع میں انتظامیہ اور پولیس کی کھلی کچہریوں بارے باقاعدہ رپورٹ پیش کی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان معاشی استحکام کی طرف بڑھ رہا ہے۔ ملتان میں نشتر ٹو کی تعمیر شروع کر دی گئی ہے۔شہر کی سڑکوں کی مرمت کے لیے فنڈز جاری کر دیئے گئے ہیں اور واسا کو شہر کا سیوریج نظام بہتر بنانے کے لیے1 ارب روپے دیئے جارہے ہیں۔ایس پی گلگشت احمد نے خطاب میں کہا کہ سٹریٹ کرائمز کو کنٹرول کرنے کے لیے پولیس متحرک ہے اور ڈولفن فورس کو سٹریٹ کرائم کی بیخ کنی کا ٹاسک دے دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ قبضہ مافیا کو سخت کاروائی کو سامنا کرنا پڑے گا۔تمام ایس ایچ اووز کو قبضہ مافیا سے متاثرہ شہریوں کی بھرپور مدد کی ہدایت کی گئی ہے۔

درخواستیں

مزید : ملتان صفحہ آخر